Altaf Hussain  English News  Urdu News  Sindhi News  Photo Gallery
International Media Inquiries
+44 20 3371 1290
+1 909 273 6068
[email protected]
 
 Events  Blogs  Fikri Nishist  Study Circle  Songs  Videos Gallery
 Manifesto 2013  Philosophy  Poetry  Online Units  Media Corner  RAIDS/ARRESTS
 About MQM  Social Media  Pakistan Maps  Education  Links  Poll
 Web TV  Feedback  KKF  Contact Us        

جمہوری نظام میں عوام کو سیاسی، معاشی، ثقافتی و مذہبی اصولوں کے مطابق زندگی گزارنے کی آزادی ہوتی ہے، الطاف حسین


جمہوری نظام میں عوام کو سیاسی، معاشی، ثقافتی و مذہبی اصولوں کے مطابق زندگی گزارنے کی آزادی ہوتی ہے، الطاف حسین
 Posted on: 9/15/2014
جمہوری نظام میں عوام کو سیاسی، معاشی، ثقافتی و مذہبی اصولوں کے مطابق زندگی گزارنے کی آزادی ہوتی ہے، الطاف حسین
جمہوری نظام میں ملک کے تمام شہریوں کا قومی وسائل پر یکساں حق ہوتا ہے، الطاف حسین
جمہوریت کا راگ الاپنے والی حکومتوں نے جمہوریت کی نرسری کہلانے والے مقامی حکومتوں کے نظام کو نافذ العمل نہیں کیا
گزشتہ 67 برسوں سے حکمرانوں نے چند خاندانوں، جاگیرداروں، وڈیروں کی عوام پر اجارہ داری کو جمہوریت کا نام دے رکھا ہے
غریب و امیر کے فرق کے سبب پاکستان معاشی، سماجی اور بین الاقوامی سطح پر تنہا ہوتا جارہا ہے، الطاف حسین 
جمہوریت کے نام پر عوام سے مذاق ہمیں اس نہج پر لے آیا ہے جہاں ہمارے پاس واپسی کی امید انتہائی کم رہ گئی ہے
ملک میں حقیقی جمہوریت کا نظام نافذ کرکے غریب، مظلوم و محروم عوام کی بنیادی سہولیات انکو انکی دہلیز تک فراہم کی جائیں، تمام پاکستانیوں کو زندگی کی بنیادی سہولیات فراہم کرکے اور غریب و متوسط طبقے کے باشعور نوجوانوں کو قومی سیاست کا حصہ بنا کر ملک کو ترقی کی راہ پر گامزن کیا جاسکتا ہے، الطاف حسین 
عالمی یوم جمہوریت پر ایم کیوایم کے قائد الطاف حسین کا خصوصی پیغام 
لندن ۔۔۔15ستمبر2014ء
متحد ہ قومی موومنٹ کے قائد الطاف حسین نے عالمی یوم جمہوریت پر اپنے خصوصی پیغام میں کہا ہے کہ جمہوریت ایک ایسے نظام کا نام ہے جس میں کسی بھی معاشرے کے تمام شہریوں کو اپنے سیاسی ، معاشی ، ثقافتی ، سماجی اور مذہبی طور طریقوں کے مطابق زندگی گزارنے کی کھلی آزادی ہوتی ہے اور قومی وسائل پر اس معاشر ے کے تمام افراد کا یکساں حق ہوتا ہے لیکن بد قسمتی سے گزشتہ 67برسوں سے ہمارے ملک میں حقیقی جمہوریت نافذ نہیں ہوسکی ہے اس عرصے میں جمہوریت کا راگ الاپنے والی حکومتوں نے عوام کے بنیادی مسائل حل کرنے کی جانب خاطر خواہ توجہ نہیں دی اور جمہوریت کی نر سری کہلانے والی مقامی حکومتوں کے نظام کو کبھی نافذ العمل ہی نہیں کیا لہٰذا ملک میں نچلی سطح تک جمہوریت کے ثمرات آج تک منتقل نہیں ہوئے اس وجہ سے پاکستان کے کونے کونے میں بسنے والے غریب عوام مزید پسماندگی اور تنگی کا شکار ہوتے جارہے ہیں۔ جناب الطاف حسین نے کہا کہ صرف چند خاندانوں ،جاگیر داروں ، وڈیروں اور کرپٹ سر مایہ داروں نے ملک کے 98%فیصد غریب ،کسان، مزدور پر اپنی اجارہ داری قائم کر کے اس تسلط کو جمہوریت کا نام دے رکھا ہے جبکہ ہمارا دین اسلام نے بھی معاشرے کے تمام افراد کو متوازی حقوق فراہم کرنے کی تعلیمات دی ہیں اور انسانوں کو رنگ ، نسل ، علاقے ، زبان یا دولت کی بنیاد پر ایک دوسرے سے عرفہ قرار نہیں دیا ہے مگر ہمارے حکمران اپنے مفادات کی غرض سے اسلامی تعلیما ت کی بھی غلط تشریح کر کے ملک کے مظلوم و محروم عو ا م کے حقوق غصب کر تے آئے ہیں ۔جناب الطاف حسین نے ملک کی موجودہ صورتحال کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ آج پاکستان معاشی ، معاشرتی ، سیاسی ، سماجی ، مذہبی ، ثقافتی اور بین الاقوامی تعلقات کی سطح پر تنہا ہوتا جا رہا ہے جس کی سب سے بڑی وجہ ملک میں غریب و امیرکا واضح فرق اور غریب عوام کو ان کی زندگی کی بنیادی سہولیات فراہم نا کرنا ہے ۔ الطاف حسین نے کہا کہ ہمارے ملک میں جمہوریت کے نام پر عوام سے مذاق کا یہ سلسلہ آج ہمیں اس نہج پر لے آیا ہے جہاں ہمارے پاس واپسی کی امید انتہائی کم رہ گئی ہے اور پاکستان مزید پستی کی جانب گامزن ہے۔الطاف حسین نے کہاکہ ملک کی موجودہ مخدوش صورتحا ل اس بات کی متقاضی ہے کہ ملک میں حقیقی جمہوریت کا نظام نافذ کرکے غریب ، مظلوم و محرو م عوام کی بنیادی سہولیات انکو انکی دہلیز تک فراہم کی جائیں، امیر غریب کا فرق ختم کر کے تمام پاکستانیوں کو زندگی کی بنیادی سہولیات دی جائیں اور غریب و متوسط طبقے سے تعلق رکھنے والے تعلیم یافتہ و باشعور عوام بالخصوص نوجوانوں کو قومی سیاست کا حصہ بنا کر انہیں اپنے ملک کیلئے بہترفیصلوں کا اختیار فراہم کیا جائے ۔

12/7/2016 10:25:55 AM