Altaf Hussain  English News  Urdu News  Sindhi News  Photo Gallery
International Media Inquiries
+44 20 3371 1290
+1 909 273 6068
[email protected]
 
 Events  Blogs  Fikri Nishist  Study Circle  Songs  Videos Gallery
 Manifesto 2013  Philosophy  Poetry  Online Units  Media Corner  RAIDS/ARRESTS
 About MQM  Social Media  Pakistan Maps  Education  Links  Poll
 Web TV  Feedback  KKF  Contact Us        

23مارچ 1940ء کی’’ قرارداد لاہور‘‘ کی روح کے مطابق صوبوں کو پاکستان کی یونین کے اندر خودمختارریاستوں کادرجہ دے دیاجائے ۔ندیم نصرت، کنوینرایم کیوایم


23مارچ 1940ء کی’’ قرارداد لاہور‘‘ کی روح کے مطابق صوبوں کو پاکستان کی یونین کے اندر خودمختارریاستوں کادرجہ دے دیاجائے ۔ندیم نصرت، کنوینرایم کیوایم
 Posted on: 3/12/2017
23مارچ 1940ء کی’’ قرارداد لاہور‘‘ کی روح کے مطابق صوبوں کو پاکستان کی یونین کے اندر خودمختارریاستوں کادرجہ دے دیاجائے ۔ندیم نصرت، کنوینرایم کیوایم
وفاق پاکستان کے پاس صرف دفاع،کرنسی اورخارجہ کے امور رہیں ،باقی تمام امورمیں ریاستوں کومکمل خودمختاری دی جائے
یہ کوئی انوکھی تجویز نہیں بلکہ بہت سارے ترقی یافتہ ممالک میں یہی نظام ہے اوراس کے کئی ماڈل موجود ہیں
اسی ایک صورت میں ملک کی نسلی ولسانی اکائیوں کے حقوق اور صوبوں کے احساس محرومی جیسے سنگین مسائل کوحل کیاجاسکتاہے
لندن کی یونیورسٹیوں اور کالجز میں زیرتعلیم پاکستانی طلبہ کے وفدسے گفتگو

متحدہ قومی موومنٹ کی رابطہ کمیٹی کے کنوینرندیم نصرت نے تجویزپیش کی ہے کہ 23مارچ 1940ء کی’’ قرارداد لاہور‘‘ کی روح کے مطابق پاکستان میں صوبوں کوختم کرکے انہیں وفاق پاکستان کی یونین کے اندر خودمختارریاستوں کادرجہ دے دیاجائے ۔انہوں نے یہ بات لندن کی یونیورسٹیوں اور کالجز میں زیرتعلیم پاکستانی طلبہ کے ایک وفدسے گفتگوکرتے ہوئے کہی۔دوران گفتگوطلبہ نے ندیم نصرت سے پاکستان کے حالات، ملک کی نسلی ولسانی اکائیوں کے حقوق اور صوبوں کووفاق سے درپیش شکایات اوران مسائل کے حل کے حوالے سے مختلف سوالات کئے ۔ ندیم نصرت نے کہاکہ یہ مسائل یقیناًبہت اہم ہیں اورپاکستان کے مفادمیں ان کاحل ہوناضروری ہے ۔ انہوں نے کہاکہ 23مارچ 1940ء کومنظورہونے والی تاریخی ’’قرارداد لاہور ‘‘ جسے بعض عناصر نے تاریخ کومسخ کرتے ہوئے ’’ قراردادپاکستان ‘‘ کانام دیدیاتھا،اس قراردادمیں بھی برصغیرکے مسلم اکثریتی علاقوں کو’’ خودمختارریاستیں‘‘ بنانے کامطالبہ کیا گیا تھا ۔لہٰذا آج پاکستان جس قسم کے حالات سے دوچارہے ان کاتقاضہ ہے کہ1940ء کی قرارداد کی روح پر عمل کیا جائے اورصوبوں کی موجودہ حیثیت ختم کرکے انہیں وفاق پاکستان کے دائرے میں رہتے ہوئے خودمختارریاستوں کادرجہ دے دیاجائے ، وفاق پاکستان کے پاس صرف دفاع،کرنسی اورخارجہ کے امور رہیں ،باقی تمام امورمیں ریاستوں کومکمل خودمختاری دی جائے۔انہوں نے کہاکہ یہ کوئی انوکھی تجویز نہیں بلکہ بہت سارے ترقی یافتہ ممالک میں یہی نظام ہے اوراس کے کئی ماڈل موجود ہیں۔انہوں نے مثال پیش کرتے ہوئے کہاکہ یوکے (یونائٹڈ کنگڈم ) بھی انگلینڈ، اسکاٹ لینڈ، ویلز اورناردرن آئرلینڈپر مشتمل ہے ۔برطانیہ کے مرکز کے پاس صر ف دفاع ، خارجہ اورکرنسی کے امورہیں، باقی تمام امورمیں اس کی ریاستیں خودمختار ہیں ،حتیٰ کہ اسکاٹ لینڈ کی کرنسی تک الگ ہے ۔ اسی طرح ’’ ریاست متحدہ ہائے امریکہ ‘‘ (United States of America) کی مثال لے لیجئے ۔ وہاں بھی صرف دفاع، خارجہ اور کرنسی کے امور مرکز کے پاس ہیں ، بقیہ تمام معاملات میں امریکہ کی ریاستیں مکمل طورپر آزاداور خودمختارہیں۔چاہے ٹریفک کامعاملہ ہویاصحت کا، تعلیم کامعاملہ ہویاامن وامان کا، تجارت کامعاملہ ہویادیگرامور، ہرمعاملے میں ہرریاست کے اپنے اپنے قوانین ہیں، ہرریاست اپنے اپنے حساب سے قوانین بناتی ہے ، کہیں Gamblingجائز ہے کہیں ناجائز، ٹریفک لائسنس اورٹریفک قوانین بھی ہر ریاست میں الگ ہیں،اسی طرح دیگرشہری امورمیں بھی ہرریاست کے الگ الگ قوانین ہیں۔ندیم نصرت نے کہاکہ یہ ڈی سینٹرلائزیشن کی صدی ہے ، ترقی ، شہری آزادی اورشہری حقوق کیلئے ڈی سینٹرلائزیشن یعنی اختیارات کو وفاق سے صوبوںیاریاستوں کومنتقل کرنا لازمی ہے۔انہوں نے کہاکہ وقت آگیا ہے کہ پاکستان میں بھی امریکہ ،برطانیہ اور دیگرترقی یافتہ ممالک کی طرح صوبوں کوریاستوں کادرجہ دے دیاجائے اورانہیں پاکستان کی یونین کے اندر رہتے ہوئے تمام معاملات میں مکمل خودمختار ی دی جائے ۔ اسی ایک صورت میں ملک کی نسلی ولسانی اکائیوں کے حقوق اور صوبوں کے احساس محرومی جیسے سنگین مسائل کوحل کیاجاسکتاہے۔ 

*****

11/18/2017 7:12:19 PM