Altaf Hussain  English News  Urdu News  Sindhi News  Photo Gallery
International Media Inquiries
+44 20 3371 1290
+1 909 273 6068
[email protected]
 
 Events  Blogs  Fikri Nishist  Study Circle  Songs  Videos Gallery
 Manifesto 2013  Philosophy  Poetry  Online Units  Media Corner  RAIDS/ARRESTS
 About MQM  Social Media  Pakistan Maps  Education  Links  Poll
 Web TV  Feedback  KKF  Contact Us        

ہمارے لاپتہ پیاروں کوفی الفوربازیاب کرایاجائے اور انہیں انصاف فراہم کیاجائے


ہمارے لاپتہ پیاروں کوفی الفوربازیاب کرایاجائے اور انہیں انصاف فراہم کیاجائے
 Posted on: 2/25/2017
ہمارے لاپتہ پیاروں کوفی الفوربازیاب کرایاجائے اور انہیں انصاف فراہم کیاجائے
ایم کیوایم کے لاپتہ کارکن شارق کمال کی اہلیہ اوراے پی ایم ایس او کے سیکریٹری جنرل احمدعلی بیگ کی والدہ ،
بہنوں اوردیگراہل خانہ کی کراچی میں پریس کانفرنس 
میرے شوہرکودوسال قبل گرفتار کیاگیاتھا، مجھے کچھ نہیں بتایا جارہا ہے کہ وہ کہاں ہیں،ان کاگناہ کیاہے،شارق کمال کی اہلیہ
ماؤں بہنوں سے ان کے پیارے چھینے جارہے ہیں، ماؤں بہنوں کی فریاد نہیں سنی جارہی ہے،،شارق کمال کی اہلیہ
کیاقانون نافذ کرنے والے اداروں کے لوگ کسی کے بیٹے نہیں؟ آخرہم انصاف کیلئے کہاں جائیں؟ کونسادروازہ کھٹکھٹائیں؟
میرے بیٹے احمدعلی کو30دسمبر2016ء کوگرفتار کیا گیا تھا اس کے بعد سے وہ غائب ہیں، والدہ احمدعلی بیگ
ہم نے عدالت میں پٹیشن بھی دائر کی ہے لیکن اب تک احمد علی بیگ کاکچھ پتہ نہیں ہے کہ وہ کہاں ہے ،
میرے بیٹے کو اب تک کسی عدالت میں بھی پیش نہیں کیاگیا،آخرمیرے بیٹے کاکیاجرم ہے ؟ والدہ احمدعلی بیگ

متحدہ قومی موومنٹ کے لاپتہ کارکنوں کے اہل خانہ نے چیف جسٹس سپریم کورٹ جسٹس ثاقب نثار، سندھ ہائیکورٹ کے چیف جسٹس سجاد علی شاہ، چیف آف آرمی اسٹاف جنرل قمرجاویدباجوہ اور وزیراعظم نوازشریف سے اپیل کی ہے کہ ان کے پیاروں کوفی الفوربازیاب کرایاجائے اوراگران پر کوئی الزام ہے تو انہیں عدالت میں پیش کیاجائے اور انہیں انصاف فراہم کیاجائے۔یہ اپیل آج ایم کیوایم کے لاپتہ کارکن شارق کمال کی اہلیہ بچوں، اوراے پی ایم ایس او کے سیکریٹری جنرل احمدعلی بیگ کی والدہ ، بہنوں اوردیگراہل خانہ نے کراچی میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئی کی۔ واضح رہے کہ شارق کمال کا تعلق شاہ فیصل کالونی سے ہے اورانہیں قانون نافذ کرنے والے اداروں نے 30مارچ 2015ء کوان کی دکان سے گرفتارکیاتھاجبکہ احمدعلی بیگ کو 30دسمبر2016ء کو قانون نافذ کرنے والے اداروں نے گرفتار کیا تھا۔ دونوں کوتاحال کسی بھی عدالت میں پیش نہیں کیاگیاہے اوران کے اہل خانہ کوکچھ نہیں بتایاجارہاہے کہ انہیں کس الزام میں گرفتارکیاگیاہے اورکہاں رکھا گیاہے ۔ لاپتہ کارکن شارق کمال کی اہلیہ نے اپنی روداد سناتے ہوئے کہاکہ میرے شوہرکودوسال قبل گرفتار کیاگیاتھا، میں دوسال سے اپنے شوہر کو ڈھونڈ رہی ہوں،مجھے کچھ نہیں بتایا جارہا ہے کہ وہ کہاں ہیں،ان کاگناہ کیاہے، اگرانہوں نے کوئی جرم بھی کیاہے تو انہیں کم ازکم سامنے تو لایا جائے ، اس طرح کیوں غائب ہواہے؟آخریہ کونسا انصاف ہے ؟میرے شوہربے گناہ ہیں ، انہیں چھوڑ دیاجائے ۔ انہوں نے کہا کہ ماؤں بہنوں سے ان کے پیارے چھینے جارہے ہیں، ماؤں بہنوں کی فریاد نہیں سنی جارہی ہے، کیاقانون نافذ کرنے والے اداروں کے لوگ کسی کے بیٹے نہیں؟ کیاوہ کسی کے باپ یابھائی نہیں ؟آخرہم انصاف کیلئے کہاں جائیں؟ کونسادروازہ کھٹکھٹائیں؟میرے شوہردوسال سے غائب ہیں، میرے تین بچے ہیں،میں کس طرح سے زندگی گزاررہی ہوں یہ میں اورمیراخداہی بہتر جانتا ہے۔یہ کہتے ہوئے وہ رونے لگیں۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان ہمارے بزرگوں نے بنایا، ہم مہاجر ہیں توکیایہ ہمارا جرم ہے ؟آخرمہاجروں کے خلا ف آپریشن کیوں کیا جارہاہے؟انہوں نے روتے ہوئے کہاکہ میں اللہ تعالیٰ سے فریاد کررہی ہوں ، اللہ تعالیٰ میری فریاد ضرورسنے گا۔اے پی ایم ایس او کے سیکریٹری جنرل احمدعلی بیگ کی والدہ نے اس موقع پر صحافیوں کوبتایاکہ میرابیٹا احمدعلی جامعہ کراچی کا ایک طالبعلم ہے اوراسے 30دسمبر2016ء کو گلشن اقبال کے علاقے 13-Dسے گرفتار کیا گیا تھا اس کے بعد سے وہ غائب ہیں، ہم نے عدالت میں پٹیشن بھی دائر کی ہے لیکن اب تک احمد علی بیگ کاکچھ پتہ نہیں ہے کہ وہ کہاں ہے ،اسے اب تک کسی عدالت میں بھی پیش نہیں کیاگیا،آخرمیرے بیٹے کاکیاجرم ہے ؟ اس نے ایساکیا کیاہے کہ اسے پکڑکرغائب کردیا گیاہے؟انہوں نے سپریم کورٹ اورسندھ ہائیکورٹس کے چیف جسٹس صاحبان، وزیراعظم ، آرمی چیف اورتمام ارباب اختیارسے دردمندانہ اپیل کی کہ ہمارے پیاروں کوبازیاب کرایاجائے ، انہیں رہاکیاجائے اوراگران پر کوئی الزام ہے تو انہیں عدالت میں پیش کیاجائے ۔ 
*****

7/26/2017 9:40:16 PM