Altaf Hussain  English News  Urdu News  Sindhi News  Photo Gallery
International Media Inquiries
+44 20 3371 1290
+1 909 273 6068
[email protected]
 
 Events  Blogs  Fikri Nishist  Study Circle  Songs  Videos Gallery
 Manifesto 2013  Philosophy  Poetry  Online Units  Media Corner  RAIDS/ARRESTS
 About MQM  Social Media  Pakistan Maps  Education  Links  Poll
 Web TV  Feedback  KKF  Contact Us        

رابطہ کمیٹی کے ارکان پروفیسرحسن ظفر عارف، مومن خان مومن، امجداللہ خان اوردیگر اسیروں کو رہا کیا جائے ۔ مصطفےٰ عزیزآبادی


رابطہ کمیٹی کے ارکان پروفیسرحسن ظفر عارف، مومن خان مومن، امجداللہ خان اوردیگر اسیروں کو رہا کیا جائے ۔ مصطفےٰ عزیزآبادی
 Posted on: 12/19/2016
رابطہ کمیٹی کے ارکان پروفیسرحسن ظفر عارف، مومن خان مومن، امجداللہ خان اوردیگر اسیروں کو رہا کیا جائے ۔ مصطفےٰ عزیزآبادی
پیپلزپارٹی کے رہنما جمہوریت کے دعوے کرتے ہیں لیکن انکی حکومت نے کراچی اورسندھ کے شہری علاقوں میں آمریت قائم کررکھی ہے،
ایم کیوایم کے رہنماؤں، کارکنوں اورمہاجرعوام کے جمہوری حقوق سلب کررکھے ہیں
ایم کیوایم کے منتخب ارکان اسمبلی اورڈیڑھ ہزار سے زائدکارکنان جیلوں میں اسیرہیں جنہیں سیاسی بنیادوں پرگرفتارکرکے قیدکیاگیاہے
جمہوریت کی علمبردارپیپلزپارٹی کی حکومت میں ایم کیو ایم کامرکزنائن زیرواورتمام دفاتر غیرقانونی طورپرسیل ہیں اورایم کیوایم
کی سیاسی سرگرمیوں پر پابندی عائد ہے 
کالعدم تنظیمیں کھلے عام جلسے جلوس کررہی ہیں جبکہ 75 سالہ رکن پروفیسرحسن ظفر عارف ، ترقی پسند رہنمامومن خان مومن اور
امجداللہ خان کونقص امن کے تحت گرفتارکرکے جیلوں میں ڈال دیاگیاہے
ایم کیوایم کے تمام دفاترکھولے جائیں ، انتقامی کارروائیاں بندکی جائیں اور ایم کیوایم کی سیاسی سرگرمیوں پر عائدپابندی ختم کی جائے

متحدہ قومی موومنٹ کی رابطہ کمیٹی کے رکن مصطفےٰ عزیزآبادی نے مطالبہ کیاہے کہ ایم کیوایم کی رابطہ کمیٹی کے ارکان پروفیسرڈاکٹرحسن ظفر عارف، مومن خان مومن، امجداللہ خان اوردیگر اسیروں کو رہا کیا جائے ۔اپنے ایک بیان میں مصطفےٰ عزیزآبادی نے کہاکہ پیپلزپارٹی کے سربراہ ،دیگر رہنما، وزیراعلیٰ سندھ اور ان کے و زرااٹھتے بیٹھتے جمہوریت کے بڑے بڑے دعوے کرتے ہیں لیکن ان کی حکومت سندھ نے کراچی اورسندھ کے شہری علاقوں میں آمریت کاراج قائم کررکھاہے، ایم کیوایم کے رہنماؤں، کارکنوں اورمہاجرعوام کے جمہوری حقوق سلب کررکھے ہیں۔کراچی اورسندھ کے دیگرشہری علاقوں میں کالعدم تنظیمیں کھلے عام جلسے جلوس کررہی ہیں، کالعدم تنظیموں کے نامی گرامی لوگ ان جلسے جلوسوں میں کھلے عام اشتعال انگیزی کررہے ہیں ،ان پر کوئی پابندی نہیں ہے،حکومت کی نظرمیں ان سے امن کوئی خطرہ نہیں جبکہ ایم کیوایم رابطہ کمیٹی کے 75 سالہ رکن پروفیسرڈاکٹرحسن ظفر عارف ، ترقی پسند رہنما مومن خان مومن اور امجداللہ خان کونقص امن کے تحت گرفتارکرکے جیلوں میں ڈال دیاگیاہے۔اسی طرح ایم کیوایم کے منتخب ارکان اسمبلی اورڈیڑھ ہزار سے زائدکارکنان جیلوں میں اسیرہیں جنہیں سیاسی بنیادوں پرگرفتارکرکے قیدکیاگیاہے ۔ مصطفےٰ عزیزآبادی نے کہاکہ جمہوریت کی علمبردارپیپلزپارٹی کی حکومت میں ایم کیو ایم کامرکزنائن زیرواورتمام دفاتر غیرقانونی طورپرسیل ہیں اورایم کیوایم کی سیاسی سرگرمیوں پر پابندی عائد ہے ۔ مصطفےٰ عزیزآبادی نے مطالبہ کیاکہ رابطہ کمیٹی کے ارکان پروفیسرڈاکٹرحسن ظفر عارف، مومن خان مومن، امجداللہ خان ، ارکان اسمبلی کنور نوید ،کامران فاروق، قمرمنصور،شاہدپاشا سمیت تمام سیاسی اسیروں کو فی الفوررہاکیاجائے،نائن زیروسمیت ایم کیوایم کے تمام دفاترکھولے جائیں ، ایم کیوایم کے خلاف کی جانے والی انتقامی کارروائیاں بندکی جائیں اور ایم کیوایم کی سیاسی سرگرمیوں پر عائدپابندی ختم کی جائے۔ 
*****

5/24/2017 8:32:35 AM