Altaf Hussain  English News  Urdu News  Sindhi News  Photo Gallery
International Media Inquiries
+44 20 3371 1290
+1 909 273 6068
[email protected]
 
 Events  Blogs  Fikri Nishist  Study Circle  Songs  Videos Gallery
 Manifesto 2013  Philosophy  Poetry  Online Units  Media Corner  RAIDS/ARRESTS
 About MQM  Social Media  Pakistan Maps  Education  Links  Poll
 Web TV  Feedback  KKF  Contact Us        

پیپلزپارٹی نے ڈسٹرکٹ ساؤتھ اور ویسٹ کے چیئرمین کے انتخاب میں ایم کیوایم کی جیت کو روکنے کیلئے اوچھے ہتھکنڈوں کا استعمال شروع کردیا ہے، ڈاکٹر فاروق ستار


پیپلزپارٹی نے ڈسٹرکٹ ساؤتھ اور ویسٹ کے چیئرمین کے انتخاب میں ایم کیوایم کی جیت کو روکنے کیلئے اوچھے ہتھکنڈوں کا استعمال شروع کردیا ہے، ڈاکٹر فاروق ستار
 Posted on: 1/5/2016 1
پیپلزپارٹی نے ڈسٹرکٹ ساؤتھ اور ویسٹ کے چیئرمین کے انتخاب میں ایم کیوایم کی جیت کو روکنے کیلئے اوچھے ہتھکنڈوں کا استعمال شروع کردیا ہے، ڈاکٹر فاروق ستار 
ایم کیوایم کی حمایت کرنے والے نومنتخب نمائندوں کو پولیس کے ذریعے دھمکیاں دی جارہی ہیں۔ ڈاکٹر فاروق ستار
نو منتخب نمائندوں کو پولیس کے ذریعے تھانے بلایا جارہا ہے اور ایم کیوایم کی حمایت سے دستبردار ہونے کیلئے دباؤ ڈالا جارہا ہے
ایم کیوایم کی حمایت کرنے والے نمائندوں کے خلاف کلری اور بغدادی تھانے کی پولیس اور گینگ وار کو استعمال کیا جارہا ہے
حکومت سندھ اوچھے ہتھکنڈوں سے گریز کرے، لوگوں کے مینڈیٹ پر ڈاکہ ڈالنے سے باز رہے۔ ڈاکٹر فاروق ستار
اگر حکومتی طاقت سے ہمارے مینڈیٹ کو توڑنے کی کوشش کی جائے گی تو احتجاج سامنے آئے گا۔ ڈاکٹر فاروق ستار
عقیل کریم ڈھیڈی کی اسٹاک ایکسچینج کمپنی کے تین اہلکاروں کی گرفتاری کی شدید مذمت کرتے ہیں۔ ڈاکٹر فاروق ستار
بروکریج ہاؤس کے خلاف کاروائی کراچی کی تاجر برادری اور کیپٹل مارکیٹ کی ٹریڈنگ کے خلاف سازش ہے۔ ڈاکٹر فاروق ستار
کراچی کے تاجروں، صنعتکاروں اور سرمایہ کاروں سے مکمل یکجہتی کا اعلان کرتے ہیں۔ ڈاکٹر فاروق ستار
آزمائش کی گھڑی میں ایم کیوایم انکے شانہ بشانہ ہے، ایم کیوایم انکا مقدمہ پاکستان کے تمام ایوانوں میں لڑے گی، ڈاکٹر محمد فاروق ستار 
خورشید بیگم سیکریٹریٹ عزیز آباد میں ایم کیوایم کی رابطہ کمیٹی کے اراکین کے ہمراہ پرہجوم پریس کانفرنس سے خطاب
کراچی ۔۔۔5، جنوری 2016ء
متحدہ قومی موومنٹ کی رابطہ کمیٹی کے سینئر ڈپٹی کنوینراورقومی اسمبلی میں پارٹی کے پار لیمانی لیڈر ڈاکٹر محمدفارو ق ستار نے کہا ہے کہ پیپلزپارٹی نے کراچی کے ڈسٹرکٹ ساؤتھ اور ویسٹ میں ایم کیوایم کے ڈسٹرکٹ چیئرمین کوکامیابی سے روکنے کیلئے حکومتی طاقت اوراوچھے ہتھکنڈوں کااستعمال شروع کردیاہے اور اس کی جانب سے پولیس کے ذریعے مسلم لیگ ن اور آزاد یوسی چیئرمین اور وائس چیئرمینوں کو پولیس کے ذریعے دھمکیاں دی جارہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ایف آئی اے کی جانب سے گزشتہ روزکراچی کی اسٹاک ایکسچینج کے بڑے برو کریج ہاؤس کے تین اہلکاروں کی بغیر وجہ گرفتاری کا اقدام کراچی اسٹاک ایکسچینج ، کراچی کی تاجر برادری اور کراچی میں ہونے والے کیپٹل مارکیٹ کی ٹریڈنگ کے خلاف ایک سازش ہے ۔ انہوں نے کراچی کے تاجروں ، صنعتکاروں اور سرمایہ کاروں سے مکمل یکجہتی کا اعلان کرتے ہوئے کہاکہ آزمائش کی اس گھڑی میں ایم کیوایم ان کے شانہ بشانہ ہے اور وہ انکا مقدمہ ایوانوں میں لڑے گی اور ضرورت پڑی تو سڑکوں بھی آئے گی ۔ان خیالات کااظہار انہوں نے منگل کی شام خورشید بیگم سیکریٹریٹ عزیز آباد میں پرہجوم پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ اس موقع پر رابطہ کمیٹی کے ارکان محترمہ ذرین مجید ، اسلم آفریدی ، ارشد حسن اور عادل خان بھی موجود تھے ۔ ڈاکٹر فاروق ستار نے کہاکہ حالیہ انتخابات میں کراچی کے عوام نے ماضی کے مقابلے میں ایم کیوایم کوبھاری اکثریت میں کامیاب کرایاہے جس کی بدولت انشاء اللہ کراچی میں ایم کیوایم کے میئراورڈپٹی میئرباآسانی منتخب ہوجائیں گے ۔ اس کے ساتھ ساتھ کراچی کے چھ اضلاع میں سے پانچ اضلاع ایسٹ ، ویسٹ، ساؤتھ،کورنگی اور سینٹرل میں بھی ایم کیوایم کے ڈسٹرکٹ چیئرمین کی کامیابی یقینی ہے۔ ڈسٹرکٹ ساؤتھ میں مسلم لیگ ن کے ساتھ ایم کیوایم کی سیٹ ایڈجسٹمنٹ ہوگئی ہے جبکہ ڈسٹرکٹ ساؤتھ اورویسٹ میں کچھ آزاد ارکان بھی ایم کیوایم کی حمایت کررہے ہیں جس کے بعد ایم کیوایم کے ڈسٹرکٹ چیئرمین کے امیدواروں کی کامیابی یقینی ہے۔ ایم کیوایم کی اس کامیابی کو روکنے کیلئے پیپلزپارٹی اور سندھ حکومت نے اوچھے ہتھکنڈے استعمال کرنا شروع کردیئے ہیں۔ اس سلسلے میں حکومت کی جانب سے ایک طرف توایم کیوایم کی حمایت کرنے والے نومنتخب بلدیاتی نمائندوں کوخریدنے کیلئے پیشکشیں کی جارہی ہیں جبکہ دوسری جانب انہیں پولیس کے ذریعے دھمکیاں دلوائی جارہی ہیں اورانہیں ایم کیوایم کی حمایت سے دستبردارہونے کیلئے دباؤڈالاجارہاہے۔ انہوں نے کہاکہ ایم کیوایم ان اوچھے ہتھکنڈوں کی شدید مذمت کر تی ہے اور حکومت سندھ سے کہتے ہیں کہ وہ ان اوچھے ہتھکنڈوں سے گریز کرے ،لوگوں کی سیاسی آراء میں جیری مینڈرنگ نہ کریں اور پولیس کے ذریعے یوسی چیئرمین اور وائس چیئرمین کو ہراساں کرنے اوردھمکیاں دینے سے باز رہیں اوراس عمل کو فی الفور بند کیاجائے ۔ انہوں نے کہاکہ جو سیاسی جمہوری انداز ہے اسی پر قائم رہ کر لوگوں کی جو آرا ء 5 دسمبر کے بلدیاتی انتخابات میں آئی ہیں اسے حکومت طاقت استعمال کرکے ، وفاداری تبدیل کراکے ، نیلام گھر لگا کراوراسی طرح کے دیگرہتھکنڈوں کے ذریعے آزاد یوسی کے چیئرمین و وائس چیئرمین اور آزاد مسلم لیگ ن کے چیئرمین و وائس چیئرمین کی وفادریاں کو خریدنے ، دھونس و دھمکی سے ان کی وفادری تبدیل کرانے کا عمل بندکیاجائے کیونکہ کراچی کے عوام اس عمل کو کسی طورپربرداشت نہیں کریں گے ۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے الیکشن کمیشن پاکستان کو بھی ان واقعات کی اطلاع کردی ہے ، ہمارے سامنے جو ثبو ت وشواہد آئے ہیں اس کے مطابق پیپلزپارٹی کی حکومت کی جانب سے ضلع ساؤتھ کے تمام تھانوں کے ایس ایچ اوز کواستعمال کیاجارہاہے ۔اس سلسلے میں خاص طورپر کلری تھانے کا ایس ایچ او ارشد خان پیش پیش ہے۔ ایس ایچ او کلری ارشد خان کی لیاری گینگ وار اور جرائم پیشہ افراد کی سرپرستی کے عمل سے لیاری اور کراچی کے عوام بخوبی واقف ہیں ۔کلری تھانے کے ایس ایچ او کی جانب سے آزاد یوسی چیئرمین ، وائس چیئرمین اور مسلم لیگ ن سے تعلق رکھنے والے چیئرمین ، وائس چیئرمین کو دھمکیاں د ی جارہی ہیں اور ان کی وفاداریاں تبدیل کرنے کی کوششیں کی جارہی ہیں۔اسی طرح بغداری تھانے کا ایس ایچ او شبیر راؤ جو وزیر اعلیٰ کا خاص آدمی بتایا جاتا ہے اور ان دنوں معطل ہے لیکن اس کے باوجودتاحال ایس ایچ او کی سیٹ پر بیٹھا ہوا ہے ، اس کی جانب سے بھی آگرہ تاج کالونی سے ایم کیوایم کی حمایت کرنے والے نومنتخب بلدیاتی نمائندے تاج الدین صدیقی کو فون پر دھمکیاں دی جارہی ہیں ، انہیں پیشکشیں کی جارہی ہیں،ہراساں کرنے کیلئے تھانے بلایاجا رہا ہے ۔ تاج الدین صدیقی کے انکارکرنے پرانہیں مختلف مقدمات میں پھنسانے اورطرح طرح کی دھمکیاں دی جارہی ہیں گے۔ آگرہ تاج کالونی یوسی ون کے وائس چیئرمین محمد خان گھانچی اور پوری گھانچی برادری جنہوں نے بلدیاتی انتخابات میں ایم کیوایم کو فون پر دھمکیاں دی جارہی ہیں ۔ پولیس اہلکاروں کی جانب سے انہیں ڈرایا جارہا ہے کہ تمہارے وارنٹ نکلے ہوئے ، مقدمہ درج ہے جبکہ الیکشن جتنے سے پہلے کوئی ایسی شکات نہیں کہ جس کے باعث محمد احمد گھانچی پر کوئی مقدمہ ہو اور گرفتاری عمل میں لائی جائے۔انہوں نے مزید کہا کہ ن لیگ سے تعلق رکھنے والے یوسی 5ضلع ساؤتھ کے وائس چیئرمین راشدکو بھی گینگ وار کی جانب سے دھمکیاں دی جارہی ہے اس سے ثابت ہوتا ہے کہ جہاں پولیس کو استعمال کیاجارہاہے وہیں گینگ وار کے ذریعے بھی دھمکیاں دلوائی جارہی ہیں ۔ ڈاکٹرفاروق ستارنے کہا کہ ہم پی پی پی کی حکومت سندھ کو یہ باور کراتے ہیں کہ وہ اپنے آئینی و قانونی اختیارات کے دائرے رہ کر کام کریں اور کوئی ایسا اقدام نہ کریں جو اشتعال انگیزی کے زمرے میں آئے ،جس سے لوگ مشعل ہوں اورلوگوں کی سیاسی آراء کی نفی ہو۔ انہوں نے کہاکہ ہم کسی طرح کا تصادم نہیں چاہتے اور ہر معاملے کو بات چیت کے ذریعے حل کرنا چاہتے ہیں ،ہم شہری حکومت کو ان کے جائز اختیارات اور وسائل دینے اور دیگر معاملات بھی بات چیت کے ذریعے حل کرنا چاہتے ہیں لیکن اگر ریاستی طاقت اور جبر کے استعمال سے ہمارے لوگوں کی سیاسی آراء اور مینڈیٹ کو توڑ نے مروڑنے کی کوشش کی جائے گی تو لوگوں کی جانب سے احتجاج سامنے آئے گا جس کی ذمہ دار پیپلزپارٹی ہو گی ۔
ڈاکٹرمحمدفاروق ستار نے پریس کانفرنس کے دوسرے موضوع پراظہار خیال کرتے ہوئے کہاکہ ایف آئی اے کی جانب سے گزشتہ روز کراچی کی اسٹاک ایکسچینج کے بڑے بروکیریج ہاؤس کے تین اہلکاروں کو بغیر کسی وجہ کے گرفتار کیاگیا ہے، عقیل کریم ڈھیڈی کی اسٹاک ایکسچینج کی بڑی کمپنی ہے اس کے تین اہلکار فرید عالم ، حاجی اقبال،طارق کو گرفتار کیاگیا ہے اور ایک ریسرچ رپورٹ کی بنیاد پر ، بروکریج کمپنیاں مستقبل کی پیش بینی کرتی ہے ، اپنا آئیڈیا مارکیٹ میں فلو کرتی ہیں کہ اسٹاک ایکسچینج کی وہ کمپنیاں جو انٹر پبلک آفرنگ کیلئے سیکورٹی سے منظور ہوجاتی ہے وہ کچھ کے بارے میں مثبت اورکچھ کے بارے میں منفی رپورٹ دیتے ہیں تاکہ انویسمنٹ کا رجحان لوگوں کو پتہ چلے۔انہوں نے کہاکہ کراچی اسٹاک ایکسچینج جو کہ پاکستان اور دنیا کی ایک معروف کیپٹل مارکیٹ کا ادارہ ہے، پورے پاکستان کی کیپیٹل ٹریڈنگ 99فیصد کراچی اسٹاک ایکسچینج میں ہوتی ہے ۔ اسلام آباد اور لاہور میں صرف ایک فیصد کاروبار ہوتا ہے ۔ کراچی اسٹاک ایکسچینج نے گزشتہ دو سالوں میں موجودہ وفاقی حکومت کو سرمایہ کاری کیلئے ڈیڑھ سے دو سو ارب کا سرمایہ فراہم کیا ہے لیکن وزارت داخلہ ، ایف آئی آے خاص طور پر کراچی کے مختلف ٹریڈنگ ہاؤسز اور اسٹاک ایکسچینج میں رجسٹرڈ بروکر ہاؤسز کو انتقامی کاروائیوں کا نشانہ بنارہی ہے ۔اے کے ڈی کی ریسرچ پر ایم ٹیک کمپنی نے وفاقی ادارہ ای او بی آئی میں سرمایہ کاری کی اور نقصان اٹھا یا ، ایم ٹیکس کمپنی جس کا تعلق پنجاب سے ہے، اس کے کسی آدمی کو گرفتار نہیں کیاگیا ہے البتہ کراچی اسٹاک ایکسچینج پرشب خون مارا گیا ۔ ایف آئی اے کا یہ اقدام کراچی اسٹاک ایکسچینج ، کراچی کی تاجر برادری اور کراچی میں ہونے والی کیپٹل مارکیٹ کی ٹریڈنگ کے خلاف ایک سازش ہے ۔انہوں نے کہاکہ ویسے تو وفاقی حکومت ، اور صوبائی حکومت بھی ایسی پالیسی اختیار کررہی ہیں جن کے ذریعے کراچی کے تاجروں و صنعتکاروں کو خصوصی طور پر نشانہ بنایا جارہا ہے،انہیں ہراساں کیاجارہا ہے ، خوفزدہ کیاجارہاہے اور اس طرح کراچی میں کاروبار اورسرمایہ کاری کے اچھے خاصے بنے بنائے ماحول کو تباہ کیاجارہا ہے ۔یہ کراچی کے خلاف اور کراچی کی تاجراورصنعتکار برادری اور تجارت ، اسٹاک ایکسچینج کے خلاف سازش ہے ۔ ڈاکٹرفاروق ستارنے وفاقی وزیر خزانہ اسحق ڈار سے اپیل کی کہ وہ اس انتقامی کاروائی کو فی الفور روکیں اور گرفتاریوں کے بجائے بیٹھ کر بات چیت کی جائے۔انہوں نے کہاکہ کراچی کے تاجروں اورصنعتکاروں نے اپنے کاروباراورسرمایہ کے ذریعے پاکستان کی خدمت کی ہے لیکن آج انہیں انتقام کانشانہ بنایاجارہاہے۔ اگر پاکستان کی خدمت کرنے والی کراچی کی تاجر برادری کے ساتھ امتیازی سلوک ہوگا ، سرمایہ کاری تجارت کی حوصلہ شکنی کی جائے گی تویہ کسی بھی طرح ملک کے مفادمیں نہیں ہوگا۔انہوں نے کہاکہ ہم قائدتحریک الطاف حسین کی جانب سے کراچی کے تاجروں ، صنعتکاورں اور سرمایہ کاروں سے مکمل یکجہتی کا اظہار کرتے ہیں اورانہیں یہ یقین دلاتے ہیں کہ ہم آزمائش کی اس گھڑی میں ان کے شانہ بشانہ کھڑے ہیں ،ہم ان کے ساتھ ہیں اور انہیں کسی بھی قیمت پراکیلا نہیں چھوڑیں گے ،ہم ان کامقدمہ پاکستان کے تمام ایوانوں میں لڑیں گے اور اگرضرورت پڑی تو اس معاملے پر سڑکوں پربھی آئیں گے، تاجر برادری ہمیں خود سے پیچھے نہیں پائے گی بلکہ آگے ہی پائے گی۔

9/30/2016 8:29:22 PM