Altaf Hussain  English News  Urdu News  Sindhi News  Photo Gallery
International Media Inquiries
+44 20 3371 1290
+1 909 273 6068
[email protected]
 
 Events  Blogs  Fikri Nishist  Study Circle  Songs  Videos Gallery
 Manifesto 2013  Philosophy  Poetry  Online Units  Media Corner  RAIDS/ARRESTS
 About MQM  Social Media  Pakistan Maps  Education  Links  Poll
 Web TV  Feedback  KKF  Contact Us        

جنرل راحیل شریف، آئی ایس آئی کے دوسابقہ چیف کے خلاف وزیراعظم نوازشریف کے وزراء کے الزامات کی تحقیقات کرائیں، الطاف حسین


جنرل راحیل شریف، آئی ایس آئی کے دوسابقہ چیف کے خلاف وزیراعظم نوازشریف کے وزراء  کے الزامات کی تحقیقات کرائیں، الطاف حسین
 Posted on: 7/25/2015
جنرل راحیل شریف، آئی ایس آئی کے دوسابقہ چیف کے خلاف وزیراعظم نوازشریف کے وزراء 
کے الزامات کی تحقیقات کرائیں، الطاف حسین
مجھے امید ہے کہ جنرل راحیل، حضرت عمر بن خطاب کے نقش قدم پر چلتے ہوئے جنرل شجاع پاشا اورجنرل ظہیر الاسلام پر
درج ذیل الزامات کی غیر جانبدارانہ تحقیقات کرائیں گے، الطاف حسین
خواجہ آصف اور محمد زبیرنے الزام لگایا ہے کہ عمران خان کے دھرنے کا پروگرام آئی ایس آئی کے دوسابقہ چیف نے بنایا تھا
آئی ایس آئی کے ان سابقہ چیفس نے سرمایہ داروں کے ذریعہ عمران خان کے دھرنے کیلئے رقم فراہم کیں
اینکرپرسن جاوید چوہدری نے الزام لگایا ہے کہ 126 دن کے دھرنوں میں تاوان (Ransom)کی بھاری رقوم بھی خرچ کی گئیں
جنرل راحیل شریف صاحب! آپ اوپر بیان کیے گئے نکات کی تحقیقات کا فی الفوراعلان کریں
لندن۔۔ 25جولائی 2015ء 
متحدہ قومی موومنٹ کے قائد جناب الطاف حسین نے پاکستان کے چیف آف آرمی اسٹاف جنرل راحیل شریف کو مخاطب کرتے ہوئے کہا ہے کہ اللہ تبارک تعالیٰ نے اپنی عنایت اور فضل وکرم کے طفیل آپ کو مسلح افواج کے منصب اعلیٰ کی سربراہی عطاکی ہے تاکہ آپ بھی خلافت راشدہ کے دوسرے امیر حضرت عمر فاروقؓ بن خطاب کے نقش قدم پر چلتے ہوئے انصاف سے کام لے سکیں ۔انہوں نے کہاکہ خلیفہ دوئم حضرت عمر فاروقؓ بن خطاب نے فرمایا ہے کہ دریائے فرات کے کنارے اگر کوئی کتا بھی بھوک سے مر جائے تو اس کا جواب بھی کل قیامت کے روز مجھ سے پوچھا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ مجھے امید ہے کہ آپ حضرت عمر بن خطاب کے نقش قدم پر چلتے ہوئے آئی ایس آئی کے دو سابقہ چیف جنرل شجاع پاشا اورجنرل ظہیر الاسلام پر موجودہ وزیراعظم نواز شریف کے وزراء کی جانب سے لگائے گئے درج ذیل الزامات کی غیر جانبدارانہ تحقیقات کرائیں گے۔ جناب الطاف حسین نے کہاکہ وزیراعظم پاکستان میاں محمد نوازشریف کی کابینہ کے اہم اور قریبی وزیرمحمد زبیر اور وزیردفاع خواجہ آصف نے درج الزامات لگائے ہیں کہ
* عمران خان کے دھرنے کا پروگرام آئی ایس آئی کے دوسابقہ چیف نے بنایا تھا
* آئی ایس آئی کے ان سابقہ چیف جنرل شجاع پاشا اورجنرل ظہیرالاسلام نے کارپوریٹ سیکٹر سے تعلق رکھنے والے سرمایہ داروں کے ذریعہ عمران خان کے دھرنے کیلئے رقوم فراہم کیں
* مشہوراینکرپرسن جاوید چوہدری کے اس الزام کی بھی تحقیقات کرائی جائے جس میں انہوں نے یہ الزام عائد کیا ہے کہ 126 دن کے دھرنوں میں تاوان (Ransom)کی بھاری رقوم بھی خرچ کی گئیں ہیں ۔ 
* 126 دن کے دھرنے کے دوران جوہلاکتیں ہوئیں خواہ وہ سویلین ہوں یا پولیس اہلکار ہوں ان کے قتل کی ذمہ داری کس پر عائد ہوتی ہے؟
* پاکستان ٹیلی ویژن پر قبضے کی آڈیو ٹیپ جس میں عمران خان اور ڈاکٹر عارف علوی کو گفتگو کرتے ہوئے پی ٹی وی پر مکمل قبضہ ہوجانے کی خوشخبری دیکر مزید اقدامات کرنے کی ہدایا ت دی گئیں۔
جنا ب الطاف حسین نے کہاکہ جنرل راحیل شریف صاحب! آپ اوپر بیان کیے گئے نکات کی تحقیقات کا فی الفوراعلان کریں تاکہ میں دوسری قسط جس میں ان بے گناہ مہاجرمقتولین ،جن کا دہشت گردی سے ساری زندگی دوردورکا بھی واسطہ نہیں ہے جنہیں کراچی میں رینجرز اہلکاروں نے فوج کے افسران کی سربراہی میں حراست کے دوران ماورائے عدالت قتل کردیا ہے ان کی شرافت کے ثبوت وشواہد آپ کے سامنے پیش کرسکوں۔

9/26/2016 3:46:31 AM