Altaf Hussain  English News  Urdu News  Sindhi News  Photo Gallery
International Media Inquiries
+44 20 3371 1290
+1 909 273 6068
[email protected]
 
 Events  Blogs  Fikri Nishist  Study Circle  Songs  Videos Gallery
 Manifesto 2013  Philosophy  Poetry  Online Units  Media Corner  RAIDS/ARRESTS
 About MQM  Social Media  Pakistan Maps  Education  Links  Poll
 Web TV  Feedback  KKF  Contact Us        

چھاپہ، گرفتاریاں اورمظالم سے ہمارے عزائم کوکمزورنہیں کیاجاسکتا، الطاف حسین


نائن زیروپررینجرز کا چھاپہ اورکہف الوریٰ اور قمرمنصور کی گرفتاری ننگی بربریت اورانسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزی ہے ، الطاف حسین
 Posted on: 7/17/2015
نائن زیروپررینجرز کا چھاپہ اورکہف الوریٰ اور قمرمنصور کی گرفتاری ننگی بربریت اورانسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزی ہے ، الطاف حسین
رینجرزوالوں کی کارروائیاں پاکستان کوجوڑنے کی طرف نہیں بلکہ اسے نقصان پہنچانے کی طرف لے جارہی ہیں
پالیسی میکرز فی الفورہنگامی طورپرسرجوڑکربیٹھیں اور پانچ کروڑ مہاجروں کے زخموں پر مرہم رکھیں
وزیراعظم نواز شریف ایم کیوایم پرمظالم کا سلسلہ بند کرائیں ،تمام گرفتارشدگان کوفی الفوررہاکرائیں، الطاف حسین
قائم علی شاہ اورآصف زرداری نے رینجرز کو ظلم وبربریت کا لائسنس دیکرسندھ کی تقسیم کا بیج بودیا ہے، الطاف حسین
اپنے ساتھیوں کی رہائی کی بھیک نہیں مانگیں گے،عدالت سے رجوع کریں گے ،الطاف حسین
اگر عدالتوں سے انصاف نہ ملاتو انصاف کے حصول کیلئے اقوام متحدہ جائیں گے، انصاف کیلئے دنیاکا ہردروازہ کھٹکھٹائیں گے ،الطاف حسین
نائن زیروپررینجرزکے چھاپے اور کہف الوریٰ اور قمرمنصورکی گرفتاری پرنائن زیرپر جمع ہونے والے کارکنوں، خواتین اوربزرگوں سے فون پر خطاب
لندن ۔۔۔ 17 جولائی 2015ء
متحدہ قومی موومنٹ کے قائدجناب الطا ف حسین نے کہاہے کہ نائن زیروپررینجرزکی جانب سے دوسری مرتبہ چھاپہ اوردورہنماؤں کی گرفتاری ننگی بربریت اورانسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزی ہے۔ یہ آئین وقانون کی تمام شقوں ، اقوام متحدہ کے انسانی حقوق کے چارٹر اوراسلام کی تعلیمات کے سراسرخلاف ہے ۔بدقسمتی سے رینجرزوالوں کی کارروائیاں پاکستان کوجوڑنے کی طرف نہیں بلکہ اسے نقصان پہنچانے کی طرف لے جارہی ہیں۔لہٰذا پالیسی میکرز فی الفورہنگامی طورپرسرجوڑکربیٹھیں، پانچ کروڑ مہاجروں کے زخموں پر مرہم رکھیں،اگران کے زخم گہرے سے گہرے ہوتے گئے تواس کا انجام کار اچھانہیں ہوگا۔ انہوں نے ان خیالات کااظہارجمعہ علی الصبح ایم کیوایم کے مرکز نائن زیروپررینجرزکے چھاپے اوررابطہ کمیٹی کے انچارج کہف الوریٰ اور رابطہ کمیٹی کے رکن قمرمنصورکی گرفتاری کی خبرسنکرنائن زیروپر جمع ہونے والے کارکنوں، خواتین اوربزرگوں سے فون پر خطاب کرتے ہوئے کیا۔ جناب الطاف حسین نے کہاکہ رینجرزنے آج نائن زیروپر دوبارہ چھاپہ مارکر بڑی بہادری کامظاہرہ کیا اورایم کیوایم کے رہنماؤں کوبلاجوازگرفتارکرکے لے گئے ۔انہوں نے کہاکہ رینجرز نے اعلان کیاتھاکہ ایم کیوایم کے فلاحی ادارے خدمت خلق فاؤنڈیشن کوزکوٰۃ فطرے کے عطیات جمع نہیں کرنے نہیں دیں گے اورانہوں نے طاقت کااستعمال کرکے ہمیں زکوٰۃ فطرہ جمع کرنے نہیں دیالیکن رینجرزکی تمام تررکاوٹوں کے باوجود اللہ تعالیٰ کے فضل وکرم کی بدولت ہم نے آج غریب بیواؤں، یتیموں اورمسکینوں کی امداد کے لئے امدادی پروگرام کرلیا۔ رینجرزکواس پر غصہ آگیااورانہوں نے اپناغصہ نکالنے کیلئے رمضان المبارک کی 29ویں شب کو نائن زیروپر چھاپہ مارکرایم کیوایم کے دورہنماؤں کوگرفتارکرلیا۔یہ کارروائی ننگی بربریت اورانسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزی ہے۔ یہ آئین وقانون کی تمام شقوں ، اقوام متحدہ کے انسانی حقوق کے چارٹر اوراسلام کی تعلیمات کے سراسرخلاف ہے ۔جناب الطاف حسین نے کہاکہ کارکنان مزیدگرفتاریوں اورچھاپوں کے لئے ذہنی وجسمانی طور پر تیاررہیں، ہم دیکھتے ہیں کہ پانچ کروڑ مہاجروں اورحق پرست پنجابیوں، پختونوں، بلوچوں، سندھیوں،سرائیکیوں ،ہزارے وال ،کشمیریوں، گلگتیوں او ر بلتستانیوں کوکس طرح گرفتار کیا جاتا ہے ۔انہوں نے کہاکہ ایسی پالیسیاں بنانے والوں نے نہیں سوچاکہ اس سے شہریوں میں محبت کے خیالات پیداہوتے ہیں یانفرت کے خیالات جنم لیتے ہیں۔ ان کوپتہ نہیں کہ اس قسم کے مظالم سے نفرت پیداہوتی ہے یامحبت پیداہوتی ہے۔ کل تک کسی وردی والے کو دیکھ کرلوگ ہاتھ ملانا اپنے لئے فخرسمجھتے تھے مگرآج ان کے جذبات قطعی برعکس ہیں۔ جناب الطاف حسین نے کہا کہ ارباب اختیاراورپالیسی میکرزاس پر سوچیں اورسمجھائیں کہ آخر اس طرح کے اقدامات ملک کوکس طرف لے جائیں گے۔ارباب اختیاراور پالیسی میکرزکوسوچناہوگاکہ وہ پاکستان کوقائم ودائم دیکھناچاہتے ہیں یاپاکستان کوکمزورکرناچاہتے ہیں؟بدقسمتی سے رینجرزوالوں کی کارروائیاں پاکستان کوجوڑنے کی طرف نہیں بلکہ اسے نقصان پہنچانے کی طرف لے جارہی ہیں۔لہٰذا پالیسی میکرزاس کاخیال کریں، فی الفورہنگامی طورپرسرجوڑکربیٹھیں، پانچ کروڑ مہاجروں کے دل جیتیں، ان کے زخموں پر مرہم رکھیں،اگران کے زخم گہرے سے گہرے ہوتے گئے تواس کا انجام کار اچھانہیں ہوگا۔ انہوں نے کہاکہ بہترہے کہ گرفتارشدگان کوچھوڑدیاجائے اورظلم کاسلسلہ بند کیاجائے۔جناب الطاف حسین نے کہاکہ16دسمبر1971ء کوسقوط ڈھاکہ ہوا،اس سے ایک سال پہلے تک کوئی یہ سوچ بھی نہیں سکتاتھاکہ مشرقی پاکستان میں قدرت حالات ایسے بدلے گی کہ پاکستان کی فوج ہتھیارڈالنے پر مجبورہوگی اورمشرقی کمان کے کمانڈرجنرل نیازی جنرل اروڑہ کے سامنے اپنی شکست کی دستاویزپر دستخط کررہے ہوں گے۔لہٰذامیرا یہی کہناہے کہ ہم پروردی اوربندوق کی طاقت نہ دکھائی جائے ایسانہ ہوکہ بین الاقوامی سطح پر حالات بدل جائیں۔ جناب الطاف حسین نے کارکنوں،خواتین اوربزرگ کارکنوں سے کہاکہ مضان کے مقدس مہینے میں رینجرزنے بہت ظلم کیاہے ۔مگرجس طرح آپ نے ماضی میں ایسے ظلم پر صبر کیا ویسے ہی صبرکامظاہرہ اس ظلم پربھی کریں، قانون کوہاتھ میں نہ لیں، کوئی ناخوشگواراقدام نہ کریں اوریقین رکھیں کہ اللہ تعالیٰ سب کچھ دیکھ رہاہے ، وہ ظلم وبربریت کرنیوالوں پر اپناعذاب نازل کرے گااوراس کاحکم دینے والوں کوبھی اس ظلم کی سزادے گا۔ جناب الطاف حسین نے خواتین،بزرگوں اور کارکنوں کوخراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہاکہ آپ نائن زیروپر چھاپے کی خبرسن کرڈرنے اورگھبرانے کے بجائے جس طرح نائن زیروپہنچے اورآپ نے جس جرات وہمت کامظاہرہ کیااس پر میں آپ کوسلام تحسین پیش کرتاہوں۔ انہوں نے اراکین رابطہ کمیٹی ، سینیٹرز اور ارکان اسمبلی کوبھی خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہاکہ ایم کیوایم میں صرف کارکن ہی جیلوں میں نہیں جاتے بلکہ رہنمابھی قربانیاں دیتے ہیں اورآج تمام رہنماؤں اورمنتخب نمائندوں نے ساتھیوں کے ساتھ نائن زیروپہنچ کربتادیاکہ ایم کیوایم میں چھوٹے بڑے کاکوئی فرق نہیں بلکہ سب برابرہیں۔ 
جناب الطاف حسین نے دین اسلام کی تبلیغ کی پاداش میں نبی کریم ؐ اورصحابہ کرامؓ پر کفارمکہ کے مظالم کا تفصیلی تذکرہ کرتے ہوئے کہاکہ سرکاردوعالم ؐ صحابہ کرام نے کفارکے مظالم میں اضافہ کے باعث تین سال تک شعب ابی طالب کی گھاٹی میں گزارے ، جب مکہ میں رہنا ناممکن بنادیا گیا تو آپ ؐ نے مدینہ ہجرت کی اور حضرت علی کرم اللہ وجہ کو اپنے بسترپر سلاکر حضرت ابوبکر صدیقؓ کے ہمراہ روانہ ہوئے اور کفارمکہ سے بچنے کیلئے غارثومیں پناہ لی، پھر مدینہ منورہ پہنچے ، بعدمیں کفارسے صلح حدیبیہ کی لیکن کفاراپنے وعدے پر قائم نہ رہے ۔ سرکاردوعالم ؐکسی سے جنگ نہیں کرناچاہتے تھے لیکن کفار مکہ آپ ؐ سے جنگ پر آمادہ تھے۔ایک طرف ہزاروں کا لشکرتھا جبکہ دوسری طرف 313 نہتے مسلمان تھے لیکن کفارکا ہزاروں کا لشکر 313 مسلمانوں کا سامنا نہ کرسکا اور میدان چھوڑ کر بھاگ گیا۔ جناب الطاف حسین نے کہاکہ رینجرز کے اہلکار بھی ایم کیوایم کے کارکنان اورعوام پر کفارمکہ کی طرح مظالم ڈھارہے ہیں، ایم کیوایم بھی کسی سے زبردستی لڑنا نہیں چاہتی لیکن رینجرز کو اس دن سے ڈرنا چاہیے، کیا وہ چاہتے ہیں کہ ہم بھی نبی کریم ؐ کی سنت پر عمل کرتے ہوئے کسی مولوی سے فتویٰ لیکر313 کا لشکر تیار کرلیں؟ انہوں نے کہاکہ تاریخ انسانی میں حق وباطل کا تیسر ا معرکہ واقعہ کربلا ہے جب 72 نفوس پرمشتمل اہل بیت نے یزید کی بیعت کرنا گوارانہ کیا ، یزیدی قوت کے آگے سرجھکانے کے بجائے سرکٹانا پسند کرلیا، آج 1400 سال گزرجانے کے بعد بھی دنیا یزید کو لعنت ملامت کرتی ہے اور حضرت امام حسین ؑ کا نام عزت واحترام سے لیاجاتا ہے۔ جناب الطا ف حسین نے کہاکہ آج جس طرح رمضان المبارک کی 29 ویں شب کو رینجرز نے نائن زیرو پر چھاپہ مارکر شریف النفس کیف الوریٰ اور قمرمنصور کوگرفتارکیا ہے، اس کارروائی سے یزیدی فوج کی لشکرکشی کی جھلک نظرآتی ہے ۔انہوں نے کہا کہ ایم کیوایم کو ختم کرنے کیلئے 1992ء میں بھی نائن زیروپر لشکرکشی کی گئی تھی لیکن آج ایم کیوایم کے کارکنان وعوام نہ صرف حوصلہ مند ہیں بلکہ تجربہ کاربھی ہیں۔پہلے نائن زیروپر چھاپہ مارا جاتا تھا تو نائن زیرو بند ہوجاتا تھا لیکن آج دومرتبہ رینجرز کے چھاپوں کے باوجود نائن زیروپر ہزاروں مائیں ، بہنیں ، بزرگ اور نوجوان ساتھی جمع ہیں، میری دعا ہے کہ اللہ تعالیٰ میرے ساتھیوں کو ظلم وجبرکا سامنا کرنے کیلئے مزید استقامت ، حوصلہ اورہمت عطافرمائے ۔ جناب الطاف حسین نے وزیراعظم میاں محمد نواز شریف سے مطالبہ کیاکہ وہ فوری طورپر مداخلت کرکے ایم کیوایم کے رہنماؤں ، کارکنوں اورہمدردوں پرڈھائے جانے والے مظالم کا سلسلہ بند کرائیں اور تمام گرفتارشدگان کوفی الفوررہاکرائیں۔ انہوں نے وزیراعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ سے کہاکہ آپ کراچی آپریشن کے کپتان ہیں ،آپ اور آپ کی جماعت کے شریک چیئرپرسن آصف زرداری نے اسٹیبلشمنٹ کی وفاداری اورتابعداری کرتے ہوئے آپ کی حکومت نے لاڑکانہ سمیت پورے سندھ میں الطاف حسین کے خلاف ایف آئی آر درج کی ہیں، رینجرز کو ظلم وبربریت اورمہاجروں کی غیرقانونی گرفتاریوں کا لائسنس دیدیا ہے انہیں یادرکھنا چاہیے کہ یہ عمل کرکے انہوں نے سندھ کی تقسیم کا بیج بودیا ہے ۔جناب الطاف حسین نے کہاکہ اللہ تعالیٰ رابطہ کمیٹی کے انچارج کیف الورایٰ ،رکن قمر منصور ، ایم کیوایم ملیر اور کورنگی کے ذمہ داران اورکارکنان پر اپنارحم وکرم فرمائے ، سرکاری دوعالم ؐ اور بزرگان دین کے صدقے ہمارے لئے غیب سے رحمت کے دروازے کھول دے ، ظلم رینجرزکے دروازے بند کرادے اور بین الاقوامی سطح پر ایسے حالات پیدا کردے کہ بے یارومددگار مہاجر آرام اورچین وسکون کی زندگی گزار سکیں ۔ انہوں نے ایم کیوایم کے تمام کارکنان ، خصوصاً بزرگوں اور خواتین سے کہاکہ وہ زیادہ سے زیادہ وقت نائن زیرو پر ڈیوٹیاں دیں تاکہ اگر ایم کیوایم کے تمام رہنماؤں کو گرفتارکرلیا جائے تو وہ نائن زیرو کے انتظام سنبھال سکیں۔ انہوں نے طلباء کو مخاطب کرتے ہوئے کہاکہ میں نہیں کہتا کہ آپ اپنی کتابیں ایک طرف رکھ دیں لیکن جس طرح قائد اعظم محمد علی جناح نے علیگڑھ یونیورسٹی کے طلباء سے کہاتھا کہ اب اپنی کتابیں کچھ دنوں کیلئے شیلف میں رکھ دیں اورپاکستان کی جدوجہد میں دن رات مصروف ہوجاؤ اسی طرح آپ بھی کتابیں ضرور پڑھیں اور تحریک کیلئے زیادہ سے زیادہ وقت نکالیں کیونکہ یہ نہ صرف قوم کی بقاء کی جنگ ہے بلکہ آنے والی نسلوں کے بہترمستقبل کی بھی جدوجہد ہے ۔ جناب الطاف حسین نے کہاکہ ایم کیوایم قانون پسند جماعت ہے اوررینجرز کی غیرقانونی گرفتاریوں کے خلاف آئینی وقانونی جدوجہد کرے گی ،وکلاء ، ایم کیوایم کے رہنماؤں اورکارکنوں کی گرفتاریوں کے خلاف عدالت میں پٹیشن دائر کریں ،ہم تمام جھوٹے مقدمات کا عدالت میں مقابلہ کریں گے ، چاہے ہمیں انصاف ملے یا نہ ملے ۔ اگر اسٹیبلشمنٹ کی ایماء پر ہمیں انصاف نہ ملاتو ہم اپنے ساتھیوں کی رہائی کی بھیک نہیں مانگیں گے اور انشاء اللہ مہاجروں کا مقدمہ اقوام متحدہ میں دائر کریں گے ، انصاف کے حصول کیلئے دنیا کا ہردروازہ کھٹکھٹائیں گے ہمیں اللہ تعالیٰ کی ذات پرکامل یقین ہے کہ ہمیں انصاف ضرور ملے گا۔ 









9/24/2016 10:40:39 PM