Altaf Hussain  English News  Urdu News  Sindhi News  Photo Gallery
International Media Inquiries
+44 20 3371 1290
+1 909 273 6068
[email protected]
 
 Events  Blogs  Fikri Nishist  Study Circle  Songs  Videos Gallery
 Manifesto 2013  Philosophy  Poetry  Online Units  Media Corner  RAIDS/ARRESTS
 About MQM  Social Media  Pakistan Maps  Education  Links  Poll
 Web TV  Feedback  KKF  Contact Us        

اے این پی کے رہنما میاں افتخار حسین کو ہتھکڑیاں ڈال کر عدالت میں پیش کرنے پر ایم کیوایم کی رابطہ کمیٹی کا اظہار مذمت


اے این پی کے رہنما میاں افتخار حسین کو ہتھکڑیاں ڈال کر عدالت میں پیش کرنے پر ایم کیوایم کی رابطہ کمیٹی کا اظہار مذمت
 Posted on: 6/1/2015 1
اے این پی کے رہنما میاں افتخار حسین کو ہتھکڑیاں ڈال کر عدالت میں پیش کرنے پر ایم کیوایم کی رابطہ کمیٹی کا اظہار مذمت
میاں افتخار حسین پر عائد کیا گیاالزام سچا ہے یا جھوٹا، اس کا فیصلہ عدالت کرے گی ، رابطہ کمیٹی
بزرگ سیاسی رہنما ء میاں افتخارحسین کو ہتھکڑیاں لگا نا پاکستان کی مشرقی تہذیب کے منہ پر طانچہ ہے، رابطہ کمیٹی 
پاکستان کا قانون کا اپنی جگہ اورہماری مشرقی روایات اور تہذیب اپنی جگہ ہے، رابطہ کمیٹی
بزرگ سیاسی رہنما میاں افتخار حسین کو ہتھکڑیاں ڈال کر عدالت میں پیش کرنے کا فوری نوٹس لیا جائے، رابطہ کمیٹی
کراچی ۔۔۔یکم ، جون2015ء
متحدہ قومی موومنٹ کی رابطہ کمیٹی نے عوامی نیشنل پارٹی کے سینئر اوربزرگ سیاسی رہنما میاں افتخار حسین کو ہتھکڑیاں ڈال کر عدالت میں پیش کرنے کی سخت ترین الفاظ میں مذمت کی ہے اور اس عمل کو پاکستان کی مشرقی روایات اور تہذیب کی صریحاً خلاف ورزی قراردیا ہے ۔ ایک بیان میں رابطہ کمیٹی نے کہاکہ بزرگ سیاسی رہنما میاں افتخار حسین پر عائد کیا گیاالزام سچا ہے یا جھوٹا، اس کا فیصلہ عدالت کرے گی ، پاکستان کا قانون کا اپنی جگہ اورہماری مشرقی روایات اور تہذیب اپنی جگہ ہے ۔ اتنے بزرگ سیاسی رہنماکو ہتھکڑیاں لگاکر عدالت میں پیش کرنا پاکستان کی مشرقی روایات اور تہذیب کے منہ پر طمانچہ ہے جس کی جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے ۔ رابطہ کمیٹی نے وزیراعظم پاکستان محمد نواز شریف ، وفاقی وزیرداخلہ چوہدری نثارعلی خان اور صوبہ خیبرپختونخوا کے وزیراعلیٰ پرویز خٹک سے مطالبہ کیا کہ اے این پی کے بزرگ سیاسی رہنما میاں افتخار حسین کو ہتھکڑیاں ڈال کر عدالت میں پیش کرنے کا فوری نوٹس لیا جائے English

12/3/2016 12:45:05 AM