Altaf Hussain  English News  Urdu News  Sindhi News  Photo Gallery
International Media Inquiries
+44 20 3371 1290
+1 909 273 6068
[email protected]
 
 Events  Blogs  Fikri Nishist  Study Circle  Songs  Videos Gallery
 Manifesto 2013  Philosophy  Poetry  Online Units  Media Corner  RAIDS/ARRESTS
 About MQM  Social Media  Pakistan Maps  Education  Links  Poll
 Web TV  Feedback  KKF  Contact Us        

خیبر پختونخوا کے بلدیاتی انتخابات میں پیش آنیوالے افسوسناک واقعات ملکی تاریخ کا سیاہ باب ہیں، حق پرست سینیٹر نگہت مرز ا حنا


خیبر پختونخوا کے بلدیاتی انتخابات میں پیش آنیوالے افسوسناک واقعات ملکی تاریخ کا سیاہ باب ہیں، حق پرست سینیٹر نگہت مرزا حنا
 Posted on: 5/31/2015
خیبر پختونخوا کے بلدیاتی انتخابات میں پیش آنیوالے افسوسناک واقعات ملکی تاریخ کا سیاہ باب ہیں، حق پرست سینیٹر نگہت مرز ا حنا
انتخابات میں پیش آنیوالے واقعا ت سے ثابت ہوگیا خیبر پختونخواکی سیاسی جماعتوں کے نزدیکانتخابی ضابطہ اخلاق کی اہمیت نہیں ہے، سینیٹر نگہت مرزا حنا
دھاندلی کی شکایات پر صوبائی حکومت سے باز پرس اور خیبر پختونخواکے بلدیاتی انتخابات کو فوری کالعدم قرار دیاجائے،مطالبہ
خورشید بیگم سیکریٹریٹ عزیزآباد میں حق پرست سینیٹرز کی پریس کانفرنس 
کراچی ۔۔۔ 31مئی2015ء
متحدہ قومی موومنٹ کی سینیٹر نگہت مرزا حنانے خیبر پختونخوا میں ہونیوالے بلدیاتی انتخابات پر شدید تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے کہاہے کہ خیبر پختونخوا کے بلدیاتی انتخابات میں بدترین دھاندلی ،جبرو تشدد ، ر خواتین کو ووٹ کے حق سے محروم رکھنے اور انتخابی قوانین کی کھلے عام دھجیاں اڑائے جانے کے عمل نے ملک کیسیاسی تاریخ میں ایک بدترین سیاہ باب کا اضافہ کیا ہے جس نے جمہوریت کی نرسری کہلائے جانے والے بلدیاتی انتخابات کے حسن کو ماند کردیا ہے ۔انہوں نے کہا کہ 30مئی کوکے پی کے میں بلدیاتی انتخابات کے دوران جس طرح جدید ترین اسلحہ کا استعمال ، پولنگ اسٹیشنوں پر حملے ،خواتین ووٹرز کو ووٹ ڈالنے سے روکنا، مخالف امیدواروں اور سیاسی کارکنوں کو ہلاک و زخمی کئے جانے کے واقعات پیش آئے اس نے پورے بلدیاتی انتخابات کی شفافیت کا بھانڈا پھوڑ دیا ۔انہوں نے کہا کہ بلدیاتی انتخابات میں پیش آنیوالے افسوسناک واقعات سے ثابت ہوگیا ہے کہ تحریک انصاف اور دیگر سیاسی و مذہبی جماعتوں کے نزدیک انتخابی ضابطہ اخلاق کی کوئی اہمیت نہیں ہے ۔ان خیالات کا اظہا ر انہوں نے اتوار کی شام خورشید بیگم سیکریٹریٹ عزیزآباد میں حق پرست سینیٹر مولانا تنویر الحق تھانوی اور سینیٹر خوش بخت شجاعت کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا ۔انہوں نے کہاکہ صوبہ میں پرامن اور شفاف بلدیاتی انتخابات کا انعقاد تحریک انصاف کی صوبائی حکومت کی ذمہ داری تھی لیکن وہ اس میں بری طرح سے ناکام ہوگئی ہے ۔ تحریک انصاف نے جیت حاصل کرنے کے لئے انتخابات کے دوران ہنگامے اور فائرنگ کے سبب 10افراد کو موت کے گھاٹ اُتاردیاگیا، خواتین کو ووٹ ڈالنے کے حق سے روک دیا گیا ،جب خواتین پولنگ اسٹیشنز پر پہنچیں تو انہیں ڈرایا دھمکایا گیا ، بیلٹ پیپرز نذر آتش کئے گئے ، جعلسازی اور بد انتظامی کی انتہاء کردی گئی اور جعلی ووٹ کاسٹ کئے گئے ،انہوں نے کہا کہ گزشتہ روز تحصیل پہاڑ پور سے ایم کیوایم کے نامزد بلدیاتی امیدوار جنید طارق پر بھی تحریک انصاف کے بلدیاتی امیدوار اور ان کے حامیوں نے قاتلانہ حملہ کیا جبکہ مختلف شہروں سے ایم کیوایم کے پولنگ ایجنٹوں کو گن پوائنٹ پر باہر نکال دیا گیا ، اورانہیں مارا پیٹا گیا۔انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف سمیت دیگر نام نہاد سیاسی و مذہبی جماعتیں صوبے میں جناب الطاف حسین کے حق پرستی کے نظریئے کے فروغ سے خوفزدہ ہیں لیکن پھر بھی بلدیاتی انتخابات میں ایم کیوایم کے انیس امیدواران کی کامیہابی اس بات کا کھلا ثبوت ہے کہ صوبے کے عوام جناب الطاف حسین کے فکر وفلسفہ اورنظریہ کو خیبرپختونخوا میں پھلتا پھولتا دیکھنا چاہتے ہیں اور کوئی بھی ظلم و جبر کا ہتھکنڈہ انہیں حق پرستی کے پیغام کے فروغ سے ہرگز نہیں روک سکتا۔انہوں نے کہا کہ عام انتخابات میں دھاندلی کا رونا رونے والی تحریک انصاف کا اصل چہرہ خیبر پختونخوا کے بلدیاتی انتخابات میں سامنے آچکا ہے اور عوام سمجھ چکے ہیں کہ دھاندلی کا رونا رونے والے ہی دراصل انتخابات کے فراڈ میں ملوث ہیں اور ا ن جماعتوں نے پورے ملک سے اسی طرح طاقت کے بل بوتے ، اسلحہ کے زور اور جبر تشدد
کے ہتھکنڈے استعمال کرکے اپنی اجارہ داری کو قائم رکھا ہے۔انہوں نے کہا کہ ملک کی بیشتر سیاسی ومذہبی جماعتوں کی جانب سے ایم کیوایم کے خلاف بہتان تراشیاں کی گئیں اور ہر واقعہ میں ایم کیوایم کو ملوث کرکے اس کا میڈیا ٹرائل کیا گیا لیکن صوبہ خیبرپختونخوا میں ہونیوالی دھاندلی پر کسی سیاسی یا مذہبی جماعت کومورد الزام نہیں ٹھرایا گیا۔انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف اور دیگر سیاسی و مذہبی جماعتیں صوبہ خیبرپختونخوا کے عوام بالخصوص خواتین کو حقوق سے یکسر محروم رکھنا چاہتی ہیں اورصوبے کے عوام کے اصل جذبات اور احساسات کو سلب کرنے کے مترادف ہے جو صوبہ خیبرپختونخوا کے عوام بالخصوص خواتین پر ظلم ہے ۔ نگہت مرزاحنا نے کہاکہ جمعیت علمائے اسلام کے سربراہ مولانا فضل الرحمن نے اس بات کا اعترا ف کیاہے کہ خواتین ووٹروں کی لائنوں میں مردوں نے برقعے پہن کر ووٹ کاسٹ کئے ہیں جبکہ بلدیاتی انتخابات کے دوران ہونے والی دھاندلی ، جبر و تشدد کے ہتھکنڈوں نے خیبرپختونخوا میں پولیس ریفارمز کا بھانڈہ پھوڑ دیا ہے۔انہوں نے کہا کہ ملک میں دھاندلی کا ڈھول پیٹنے والی تحریک انصاف کے غبارے سے ہوا نکل گئی ہے۔انہوں نے کہا کہصوبہ خیبرپختونخوا کے بلدیاتی انتخابات میں ہونیو الی بدترین دھاندلی کے واقعات نے پاکستان کی دنیا بھر میں جگ ہنسائی کا سامان فراہم کیا ہے۔انہوں نے صدر مملکت پاکستان ممنو ن حسین ، وزیراعظم پاکستان محمد نواز شریف ، چیف جسٹس آف پاکستان اور چیف الیکشن کمشنر سے مطالبہ کیاکہ وہ خیبرپختونخوا میں بدترین دھاندلی کی شکایات پر تحریک انصاف کی صوبائی حکومت سے باز پرس کریں ، خیبر پختونخواکے بلدیاتی انتخابات کو فوری کالعدم قرار دیں اور غیر جانبدار مبصرین کی زیر نگرانی از سر نو انتخابات کراکر بلدیاتی انتخابات میں قتل و غارتگری ، کھلی دھاندلی ، جبر و تشدد کے ہتھکنڈوں میں ملوث ایک ایک فرد کو قانون کے مطابق سخت سزا دلوائیں ۔ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ایم کیو ایم اس معاملے کو سینیٹ اور قومی اسمبلی سمیت ہر فورم پر اُٹھائے گی ۔ سوال کے جواب میں سینیٹر مولانا تنویر الحق تھانوی اور سینیٹر خوش بخت شجات نے کہا کہ خواتین کو ووٹ کے حق سے محروم رکھنا افسوسناک بات ہے تحریک انصاف اور جماعت اسلامی نے این اے 246کراچی کے ضمنی انتخابات میں خواتین کے جلسے کئے لیکن جب انکے ووٹ ڈالنے کی بات ہوئی تو انہیں محروم کردیاگیا اور گھروں میں بند کردیا گیا۔انہوں نے کہاکہ تحریک انصاف اور جماعت اسلامی نظریہ ضرورت کے تحت خواتین کو استعمال کر رہی ہیں اور انکے ساتھ منافقت کر رہی ہیں ۔

12/3/2016 3:43:45 AM