Altaf Hussain  English News  Urdu News  Sindhi News  Photo Gallery
International Media Inquiries
+44 20 3371 1290
+1 909 273 6068
[email protected]
 
 Events  Blogs  Fikri Nishist  Study Circle  Songs  Videos Gallery
 Manifesto 2013  Philosophy  Poetry  Online Units  Media Corner  RAIDS/ARRESTS
 About MQM  Social Media  Pakistan Maps  Education  Links  Poll
 Web TV  Feedback  KKF  Contact Us        

کراچی والے سڑکوں پر نکل آئے ہیں پانی کے مطالبے کااحتجاج کراچی کی خودمختاری کے مطالبے پر مکمل ہوگا، ڈاکٹر محمد فاروق ستار


کراچی والے سڑکوں پر نکل آئے ہیں پانی کے مطالبے کااحتجاج کراچی کی خودمختاری کے مطالبے پر مکمل ہوگا، ڈاکٹر محمد فاروق ستار
 Posted on: 5/23/2015
کراچی والے سڑکوں پر نکل آئے ہیں پانی کے مطالبے کااحتجاج کراچی کی خودمختاری کے مطالبے پر مکمل ہوگا، ڈاکٹر محمد فاروق ستار 
K4کے پہلے مرحلے کا فور ی آغازکیاجائے،بڑے پمپنگ اسٹیشن کی اپگریڈیشن سمیت کراچی کو پانی کی فراہمی کے40منصوبوں کو 2015-16 کے بجٹ میں رکھا جائے 
پانی سے محروم رکھنا سندھ حکومت کی کراچی دشمنی کا منہ بولتا ثبوت ہے شہرکو ٹینکر مافیہ کے حوالے کردیا گیاہے،ڈاکٹر محمد فاروق ستار
کراچی میں محب وطن لوگ بستے ہیں جو ملک کی معیشت کا پہیہ چلا رہے ہیں ، قمر منصور
کراچی کے عوام کو انکا حق دئیے بغیر پاکستان کو ایشین ٹائیگر بنانے کا خواب کبھی شرمندہ تعبیر نہیں ہوسکتا، عبد الرشید گوڈیل
ایم کیوا یم نے کراچی کے عوام کیلئےK3 منصوبے کے بعد K4منصوبہ شروع کروایا لیکن اسے کرپشن کی نظر کردیاگیا ، علی رضا عابدی
صوبہ سندھ بالخصوص کراچی میں پانی کے بحران کے خلاف کراچی پریس کلب پر ایم کیو ایم کے احتجاجی مظاہرے سے مقررین کا خطاب
کراچی ۔۔۔23مئی2015ء
صوبہ سندھ بالخصوص کراچی میں پانی کے مصنوعی بحران کے خلاف کراچی پریس کلب پر ایم کیوا یم کے زیر اہتمام احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے ایم کیو ایم رابطہ کمیٹی کے رکن ڈاکٹر محمد فاروق ستار نے کہا کہ ایم کیو ایم کے منتخب نمائندوں نے وفاقی و پیپلز پارٹی کی صوبائی حکومت سے بارہا مطالبہ کیا کہ وہ کراچی کے حقوق غصب نہ کریں اور عوام کو سڑکوں پر آنے کیلئے مجبور نہ کریں لیکن ہماری شنوائی نہیں ہوئی اور آج عوام حقوق کیلئے سڑکوں پر نکل آئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ پانی کے بحران پر احتجاج ایک دو روز کانہیں بلکہ یہ ایک احتجاجی تحریک ہے جو کراچی میں پانی کے بحران اور حکمرانوں کے متعصبانہ رویے کے خلاف جو کراچی کی تاریخ کی سب سے بڑی احتجاجی تحریک ہوگی ہوگاجو صرف پانی کے مطالبے پر نہیں بلکہ کراچی کی خودمختاری کے مطالبے پر مکمل ہوگی۔انہوں نے کہا کہ کراچی کے غیور پاکستانیوں کبھی معاشی استحکام کے نام پر ہمارے ٹیکسوں میں اضافہ کیا گیا کبھی امن و امان کے نام پر ہمیں دیوار سے لگایا گیا اور آج پانی بند کرکے کراچی کے عوام کی عزت نفس مجروح کی گئی ہے۔انہوں نے کہا کہ ظالم و جابر حکمرانوں نے جناب الطاف حسین اور کراچی کے عوام کی محبت کو کمزور کرنے کیلئے کراچی کے عوام کا پانی بند کیا ہے ۔جناب الطاف حسین سے محبت کے جرم میں پانی کا مصنوعی بحران پیدا کیا گیا ہے لیکن انہیں اس مرتبہ بھی مایوسی کا سامنہ ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ کراچی کے عوام کو پانی جیسی بنیادی سہولت سے محروم رکھنا سندھ حکومت کی کراچی دشمنی کا منہ بولتا ثبوت ہے اور کراچی کا پانی سیاسی بنیادوں پر تقسیم کر کے مصنوعی قلت پیدا کی جارہی ہے انکا کہنا تھا کہ شہرکو ٹینکر مافیہ کے حوالے کردیا گیاہے۔
انہوں نے کہا کہ کراچی کے عوام کو خودمختاری اور وسائل دئیے بغیر ملک کا کوئی علاقہ ترقی نہیں کر سکتا ۔انہوں نے کہا کہ جب ایم کیوایم نے عوامی احتجاج کی کال دی تو جواب میں حکومت نے 20کروڑ روپے ٹینکر مافیہ کو دیکر کراچی کے عوام کا مذاق اُڑایا ۔ڈاکٹر محمد فاروق ستار نے صوبائی حکمرانوں سے کہا کہ جب کراچی میں پانی کی بوند بوند کے پیاسے مافیہ کے خلاف گلی محلہ احتجاج کریں گے اور وزیر اعلیٰ ہاؤس و ارباب اختیار کے دروازوں پر احتجاج کریں گے تو اس کو روکنا کسی کے بس میں نہیں ہوگا۔انہوں نے کہا کہ کراچی میں 450ملین گیلن پانی کی قدرتی کمی ہے لیکن اس کے حل کیلئے بھی گزشتہ 7برسوں میں کوئی اقدام نہیں کیا گیا جبکہ لیاری کے عوام کو بیوہ قوف بناکر ڈیڑھ ارب کے واٹر پلانٹس کو 6ارب میں لگا کر 10ملین گیلن پانی دیاگیا جو نظام آج بندپڑا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر عوام اپنے حقوق کیلئے پر امن طور پر سڑکوں پر نہ آئے تو کراچی میں پانی کے حصور کیلئے فسادات کا اندیشہ ہے ۔انہوں نے کہ عوامی احتجاج میں قرارداد پیش کرتے ہوئے حکومت سے مطالبہ کیا کہ K4کے پہلے مرحلے کا فور ی آغاز کیا جائے ، گھارو، پپری ، دھابیجی اور نارتھ ایسٹ کراچی کے پمپنگ اسٹیشن کی اپگریڈیشن سمیت واٹر بورڈ کے 40منصوبوں کو 2015-16 کے بجٹ میں رکھا جائے ،کراچی میں پانی کا منصفانہ نظام قائم کیا جائے اور پمپنگ اسٹیشنز پر اہل لوگوں کو تعینات کرکے فی الفور غیر قانونی ہائیڈرینٹس اور ٹینکر مافیہ کا خاتمہ کیا جائے۔جس پر ہزاروں شرکاء نے اپنے دونوں ہاتھ فضاء میں بلند کرکے ایم کیوا یم کے مطالبوں کی کھلی تائید کی۔ رابطہ کمیٹی کے رکن قمر منصور نے کہا کہ ملک میں پارلیمنٹ، عوام اور انصاف کا راگ ا لاپنے والے آج کراچی کے عوام کے بنیادی حقوق غصب کئے جانے پر خاموش ہیں ۔انہوں نے کہا کہ کراچی صحرا بن گیا ہے لیکن آج ایم کیو ایم کے علاوہ کوئی سیاسی جماعت آواز بلند نہیں کر رہی شاید انہیں اس بات کا علم نہیں کہ کراچی میں محب وطن لوگ بستے ہیں جو ملک کی معیشت کا پہیہ چلا رہے ہیں لیکن گزشتہ 3سالہ دور حکومت میں کراچی کی ترقی کیلئے کو ئی وفاقی منصوبہ کام نہیں کررہا ہے ۔انہوں نے کہا کہ کراچی وفاق اور صوبے کو جو ٹیکس دیتا ہے جواب میں یہاں کے عوام کو 2فیصد بھی نہیں ملتاجس کے نتیجے میں کراچی میں بسنے والے لوگوں کی فلاح کیلئے کوئی کام نہیں ہورہا ۔انہوں نے کہا کہ سانحہ صفورا میں جماعت اسلامی کے ملوث ہونے پر تجزیہ نگار ، اینکر پرسن ، قلمکار خوفزدہ ہیں اور سچائی نہیں لکھ رہا۔انہوں نے کہاکہ سندھ حکومت اسمبلی ہال اور ایم پی اے ہاسٹل کی تعمیر پر اربوں روپے لگارہی ہے لیکن کراچی کے عوام کو پانی دینے کیلئے کچھ نہیں کر رہی۔قومی اسمبلی میں حق پرست پارلیمانی لیڈر عبد الرشید گوڈیل نے کہا کہ کراچی کو اپنے مفادا ت کیلئے منی پاکستان کہا جاتاہے لیکن اس کے مسائل حل کرنے کیلئے کوئی سنجیدہ نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ کراچی میں صوبہ سندھ کی نصف سے زائد فیصد آبادی رہتی ہے لیکن یہاں کے عوام پر 2فیصد بھی خرچ نہیں ہوتاکراچی کو ترقی دیئے بغیر پاکستان کو ایشین ٹائیگر بنانے کا خواب کبھی شرمندہ تعبیر نہیں ہوسکتا ۔انہوں نے کہا کہ جو لوگ ملک کے سب سے بڑے شہر کو پانی فراہم نہیں کرسکتے وہ پاکستان کو ایشین ٹائیگر کیسے بنائیں گے۔انہوں نے کہا کہ2013ء کے بجٹ میں لاڑکانہ کو کراچی سے زائد رقم دی گئی لیکن لاڑکانہ کے غریب عوام آج بھی مفلسی کا شکار ہیں ۔انہوں نے کہا کہ کراچی کے عوام حکمرانوں سے بھیک نہیں مانگ رہے اپنا حق مانگ رہے ہیں اور اپنا حق حاصل کر کے رہیں گے حق پرست رکن قومی اسمبلی علی رضا عابدی نے کہا کہ ایم کیوا یم نے کراچی کو پانی کی فراہمی کیلئے K3کا منصوبہ مکمل کرکے لیاری ، کیماڑی اور بابابھٹ جیسے علاقوں تک پانی کی لائنیں بھچائیں جس کے بعد ایم کیو ایم نے K4کا منصوبہ شروع کروایا لیکن اسے کرپشن کی نظر کرکے تعطل کا شکار کیا گیا۔انہوں نے کہا کہ اگر متعصب حکمرانوں نے کراچی کو کمزور کرنے اور عوام کے حقوق غصب کرنے کا سلسلہ بند نہ کیا تو کراچی کے عوام ملک کی معیشت میں اپنا حصہ ادا نہیں کریں گے۔ حق پرست رکن صوبائی اسمبلی دلاور قریشی نے کہا کہ کراچی کا ملک کی معیشت میں اہم کردار ہے جس کا اعتراف پورا پاکستان کرتا ہے لیکن کراچی کو اسکا حصہ فراہم نہیں کیا جاتا ۔انہوں نے کہا کہ وزیر اعلیٰ سندھ اور سندھ حکومت کراچی کو بڑے بڑے منصوبے دینے کے دعوے کرتی ہے لیکن حقیقت میں کراچی کو اس کا حصہ دینے کیلئے کوئی سیاسی جماعت یا حکومت کردار ادا نہیں کرتی جس پر اگر عوام احتجاج کرتی ہے تو جبر و تسلط سے انکی آواز دبانے کی کوشش کی جاتی ہے ۔ آج کراچی کے عوام کو پینے کیلئے پانی نہیں دیا جاتا اور عوام کو جھوٹے وعدوں اور بہانوں سے بہلانے کی کوشش کی جارہی ہے۔انہوں نے کہا کہ سال 2015ء کے آغاز میں کراچی کو 65ایم جی ڈی پانی دینے کے وعدے کئے گئے لیکن ابھی تک اس میں سے ایک ایم جی ڈی پانی بھی کراچی کو فراہم نہیں کیا گیا۔سینٹرل ایگزیکٹو کونسل کی رکن شمع منشی نے کہاکہ کراچی کے عوام سے ووٹ مانگنے کیلئے تمام سیاسی جماعتیں بیان بازیاں کرتی ہیں لیکن کراچی کے عوام کو پانی سمیت انکی بنیادی سہولیات فراہم کرنے کیلئے ایم کیو ایم کے علاوہ کوئی جماعت آواز بلند نہیں کرتی ۔انہوں نے کہا کہ اسمبلیوں میں کراچی کے عوام کیلئے آواز اُٹھانے کے بعد آج ایم کیو ایم عوام کے بنیادی حقوق کے حصول کیلئے سڑکوں پر عوام کے ۔


مزید تصاویر
English

9/28/2016 10:24:24 AM