Altaf Hussain  English News  Urdu News  Sindhi News  Photo Gallery
International Media Inquiries
+44 20 3371 1290
+1 909 273 6068
[email protected]
 
 Events  Blogs  Fikri Nishist  Study Circle  Songs  Videos Gallery
 Manifesto 2013  Philosophy  Poetry  Online Units  Media Corner  RAIDS/ARRESTS
 About MQM  Social Media  Pakistan Maps  Education  Links  Poll
 Web TV  Feedback  KKF  Contact Us        

گلگت بلتستان کی عبوری کابینہ میں بشارت اللہ کی متوقع شمولیت پر رابطہ کمیٹی کا شدیداظہار مذمت


گلگت بلتستان کی عبوری کابینہ میں بشارت اللہ کی متوقع شمولیت پر رابطہ کمیٹی کا شدیداظہار مذمت
 Posted on: 1/20/2015
گلگت بلتستان کی عبوری کابینہ میں بشارت اللہ کی متوقع شمولیت پر رابطہ کمیٹی کا شدیداظہار مذمت
گلگت بلتستان میں انتخابی عمل کو غیر جانبدار نہ بنایا گیا توایم کیوایم اپنا آئینی اور قانونی چارہ جوئی کرنے کا حق محفوظ رکھتی ہے ۔ رابطہ کمیٹی 
گلگت بلتستان اسمبلی میں مسلم لیگ (ن )کے سابق قائد حزب اختلاف کے بھتیجے بشارت اللہ کی عبوری کابینہ میں شمولیت سے انتخابی عمل مشکوک ہونے کا اندیشہ ہے
گلگت بلتستان کی قانون ساز اسمبلی کیلئے ہونے والے انتخابات کیلئے انتخابی مہم شروع ہونے سے پہلے ہی انتخابات میں دھاندلی کا پلان بنالیا گیا ہے ۔ایم کیو ایم رابطہ کمیٹی
کسی مخصوص سیاسی جماعت یا گروپ سے تعلق رکھنے والے شخص کی عبوری کابینہ میں شمولیت سے گلگت بلتستان میں ہونے والے انتخابات متنازعہ ہونے کا خدشہ ہے ۔رابطہ کمیٹی 
کراچی ۔۔۔20جنوری2015ء
متحدہ قومی موومنٹ کی رابطہ کمیٹی نے گلگت بلتستان کی عبوری کابینہ میں مسلم لیگ (ن )سے تعلق رکھنے والے گلگت بلتستان اسمبلی کے سابق قائد حزب اختلاف کے بھتیجے بشارت اللہ کی متوقع شمولیت کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے۔ ایک بیان میں رابطہ کمیٹی نے کہا کہ بشارت اللہ کی عبوری کابینہ میں شمولیت سے محسوس ہوتاہے کہ گلگت بلتستان کی قانون ساز اسمبلی کیلئے ہونے والے انتخابات کیلئے انتخابی مہم شروع ہونے سے پہلے ہی انتخابات میں دھاندلی کا پلان بنالیا گیا ہے جس کی جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے ۔ رابطہ کمیٹی نے کہا کہ گلگت بلتستان میں صاف شفاف اور دھاندلی سے پاک انتخابات کرانے کے لئے قائم عبوری کابینہ میں ایسے افراد کو شامل کیا جائے جن کا کسی بھی سیاسی و مذہبی جماعت سے تعلق نہ ہو اور اگر کسی کو شامل کرنا ناگزیر ہی ہو تو پھر تمام سیاسی جماعتوں کے نمائندوں کو عبوری کابینہ کا حصہ بنایاجائے ۔رابطہ کمیٹی نے کہا کہ بشارت اللہ کو اگر عبوری کابینہ کا حصہ بنایا گیا توچلاس اور دیا میر کے انتخابی حلقوں پر براہ راست اثر پڑنے کا اندیشہ ہے لہذاکسی مخصوص سیاسی جماعت یا گروپ سے تعلق رکھنے والے شخص کی عبوری کابینہ میں شمولیت سے گلگت بلتستان میں ہونے والے انتخابات متنازعہ ہونے کا خدشہ ہے ۔ رابطہ کمیٹی نے کہا کہ اگرالیکشن کمیشن گلگت بلتستان قانون ساز اسمبلی کیلئے ہونے والے انتخابات کو غیر جانبدارانہ اور شفاف بنانے کے لئے اپنا کراداراداکرے اوراگر انتخابی عمل کو غیر جانبدار نہ بنایا گیا توایم کیوایم اپنا آئینی اور قانونی چارہ جوئی کرنے کا حق محفوظ رکھتی ہے ۔
English


12/4/2016 6:25:52 PM