Altaf Hussain  English News  Urdu News  Sindhi News  Photo Gallery
International Media Inquiries
+44 20 3371 1290
+1 909 273 6068
[email protected]
 
 Events  Blogs  Fikri Nishist  Study Circle  Songs  Videos Gallery
 Manifesto 2013  Philosophy  Poetry  Online Units  Media Corner  RAIDS/ARRESTS
 About MQM  Social Media  Pakistan Maps  Education  Links  Poll
 Web TV  Feedback  KKF  Contact Us        

سانحہ 31 اکتوبر 86ء ایم کیوایم کو اس کے ابتدائی دور ہی میں ختم کرنے کی ایک بھیانک سازش کا حصہ تھا۔ الطاف حسین


سانحہ 31 اکتوبر 86ء ایم کیوایم کو اس کے ابتدائی دور ہی میں ختم کرنے کی ایک بھیانک سازش کا حصہ تھا۔ الطاف حسین
 Posted on: 10/30/2014
سانحہ 31 اکتوبر 86ء ایم کیوایم کو اس کے ابتدائی دور ہی میں ختم کرنے کی ایک بھیانک سازش کا حصہ تھا۔ الطاف حسین
سازش کے تحت ایم کیوایم کے جلوسوں پر سہراب گوٹھ کراچی اور مارکیٹ چوک حیدرآباد کے مقام پر وحشیانہ فائرنگ کرائی گئی جسکے نتیجے میں درجنوں کارکنان شہید و زخمی ہوگئے تھے
اس وقت کی جنرل ضیاء الحق کی فوجی حکومت نے الٹا ایم کیوایم کے خلاف ہی ریاستی آپریشن کیا، الطاف حسین
حیدرآباد سے کراچی واپس آتے ہوئے مجھے گھگھر پھاٹک کے مقام پر گرفتار کرلیا گیا، ایم کیوایم کے ہزاروں کارکنوں اور رہنماؤں کو گرفتار کیا گیا
سندھ بھرمیں گھر گھر ظلم و ستم کے پہاڑ توڑے گئے اور سندھ کی جیلیں ایم کیوایم کے کارکنوں سے بھردی گئیں
سانحہ 31 اکتوبر کے شہدا کی قربانیاں رائیگاں نہیں جائیں گی اور تحریک اپنی منزل پر ضرور پہنچے گی
31 اکتوبر86ء ایم کیوایم کے شہداء نے جو قربانیاں دیں وہ ہمیشہ یاد رکھی جائیں گی
سانحہ 31 اکتوبر 86ء کے شہداء کی 28ویں برسی کے موقع پر بیان، شہداء کو خراج عقیدت
لندن۔۔۔30 اکتوبر2014ء
متحدہ قومی موومنٹ کے قائدجناب الطاف حسین نے کہاہے کہ 31 اکتوبر1986ء ایم کیوایم کی جدوجہد کاایک ناقابل فراموش دن ہے اور اس روزتحریک کے شہداء نے جو قربانیاں دیں وہ ایم کیوایم کی جدوجہدمیں ہمیشہ یادرکھی جائیں گی۔ سانحہ 31 اکتوبر 86ء کے شہداء کی 28ویں برسی کے موقع پر اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہاکہ سانحہ 31 اکتوبر1986ء ایم کیوایم کواس کی جدوجہد کے ابتدائی دورہی میں ختم کرنے کی ایک بھیانک سازش کاحصہ تھا جب حیدرآبادکے پکاقلعہ گراؤنڈ میں ایم کیوایم کے دوسرے عوامی جلسہ عام میں شرکت کیلئے کراچی سے حیدرآبادجانیوالے ایم کیوایم کے جلوسوں پر سہراب گوٹھ کراچی اورمارکیٹ چوک حیدرآبادکے مقام پر مسلح دہشت گردوں کے ذریعے وحشیانہ فائرنگ کرائی گئی تھی جسکے نتیجے میں ایم کیوایم کے درجنوں کارکنان شہیدوزخمی ہوگئے تھے ۔ جناب الطاف حسین نے کہاکہ ایم کیوایم کے پرعزم، وفاشعار،بہادراورجیالے کارکنوں نے اس روز اس ظلم وبربریت اورکئی ساتھیوں کی شہادت کے باوجود جس عزم وہمت ،جوانمردی اورایثاروقربانی کامظاہرہ کیااورتحریک کے جلسہ عام کے انعقادکویقینی بنایاوہ ناقابل فراموش ہے ۔جناب الطاف حسین نے کہاکہ یہ ظلم تھا کہ ایم کیوایم کے کارکنوں کے خون سے ہولی کھیلنے والوں کے خلاف کارروائی کے بجائے اس وقت کی جنرل ضیاء الحق کی فوجی حکومت نے الٹاایم کیوایم کے خلاف ہی ریاستی آپریشن کیا،حیدرآبادسے کراچی واپس آتے ہوئے مجھے گھگھرپھاٹک کے مقام پر گرفتارکرلیاگیا ۔اس کے ساتھ ساتھ ایم کیوایم کے ہزاروں کارکنوں اور رہنماؤں کوگرفتارکیاگیا،مجھے اورایم کیوایم کے ہزاروں کارکنوں کوتھانوں اورخفیہ سرکاری ٹارچرسیلوں میں بدترین تشددکانشانہ بنایاگیا ، سندھ بھرمیں گھرگھرظلم وستم کے پہاڑ توڑے گئے اورسندھ کی جیلیں ایم کیوایم کے کارکنوں سے بھردی گئیں۔ جناب الطاف حسین نے کہاکہ مہاجروں کے وحشیانہ قتل عام اوردیگرسانحات کی طرح سانحہ 31 اکتوبر86ء کے ذمہ داروں کوبھی آج تک کوئی سزا نہیں دی گئی ۔انہوں نے کہاکہ سانحہ 31 اکتوبرکے شہدا کی قربانیاں رائیگاں نہیں جائیں گی اورتحریک اپنی منزل پر ضرورپہنچے گی۔ انہوں نے دعاکی کہ اللہ تعالیٰ تحریک کے ان شہداء کی قربانیوں کوقبول فرمائے اور انہیں جنت الفردوس میں اعلیٰ مقام عطاکرے۔ 


12/3/2016 7:57:03 PM