Altaf Hussain  English News  Urdu News  Sindhi News  Photo Gallery
International Media Inquiries
+44 20 3371 1290
+1 909 273 6068
[email protected]
 
 Events  Blogs  Fikri Nishist  Study Circle  Songs  Videos Gallery
 Manifesto 2013  Philosophy  Poetry  Online Units  Media Corner  RAIDS/ARRESTS
 About MQM  Social Media  Pakistan Maps  Education  Links  Poll
 Web TV  Feedback  KKF  Contact Us        

بلاول زرداری کی جانب سے ایم کیوایم اور قائدِ تحریک الطاف حسین پر بلاجواز تنقید پر ایم کیوایم رابطہ کمیٹی کا اظہار مذمت


بلاول زرداری کی جانب سے ایم کیوایم اور قائدِ تحریک الطاف حسین پر بلاجواز تنقید پر ایم کیوایم رابطہ کمیٹی کا اظہار مذمت
 Posted on: 10/18/2014
بلاول زرداری کی جانب سے ایم کیوایم اور قائدِ تحریک الطاف حسین پر بلاجواز تنقید پر ایم کیوایم رابطہ کمیٹی کا اظہار مذمت
قائدتحریک الطاف حسین کی 36 سالہ سیاسی جدوجہد کا نتیجہ ہے آج وڈیرانہ نظام اور موروثی سیاسی کلچر ایک گالی بن گیا ہے
پیپلزپارٹی 43 سال سے پورے ملک اور خصوصاًسندھ میں مکمل اختیارکے ساتھ حکومت کررہی ہے، لیکن ان 43 سالوں میں پیپلزپارٹی نے سندھ کیلئے کیاکیا؟
پیپلزپارٹی نے 43سالوں میں لاڑکانہ اورنوڈیروکیلئے کیاکیاہے؟ سند ھ کے غریب ہاری آج بھی ٹوٹی جھونپڑیوں میں بھوک پیاس کی زندگی گزار رہے ہیں
ایم کیوایم کو لوکل گورنمنٹ کی شکل میں کراچی کااقتداراوراختیارملاتوایم کیوایم نے بڑے پیمانے پر ترقیاتی کام کرکے پانچ سالوں میں کراچی کانقشہ بدل دیا
پیپلزپارٹی نے محض کراچی دشمنی میں کراچی کومزیدترقی دیناتودورکی بات ہے ، کراچی کوتباہی سے دوچارکیاہے
وفاقی حکومت سے کراچی کا پیکج مانگنے والے بتائیں کہ پیپلزپارٹی کی سندھ حکومت کراچی کوکتنافنڈدے رہی ہے؟ 
حکومت سندھ توکراچی کے بلدیاتی اداروں کے ملازمین کوتنخواہیں حتیٰ کہ کچراگاڑیوں کے پیٹرول کے پیسے دینے کیلئے بھی تیارنہیں ہے
وزارتِ صحت کو بھی وزیرصحت نہیں بلکہ عملاً پیپلزپارٹی کی اعلیٰ شخصیات چلارہی ہیں۔رابطہ کمیٹی
کراچی۔۔۔مورخہ: 18اکتوبر 2014ء
متحدہ قومی موومنٹ کی رابطہ کمیٹی نے پی پی پی کے چیئر مین بلاول زرداری کی جانب سے کراچی میں ہونے والے جلسہ عام میں ایم کیوایم اور قائدِ تحریک جناب الطاف حسین پربلاجوازتنقید کی مذمت کرتے ہوئے کہاہے کہ قائدِ تحریک جناب الطاف حسین عوام کے دلوں میں رہتے ہیں اور عوامی جذبات کی ترجمانی کرتے ہیں اسی وجہ سے وہ دشمنوں کی تمام تر سازشوں کے باوجود آج بھی عوام کے مقبول ترین لیڈر ہیں اوراب سندھ کے غریب ہاری اورنوجوان بھی اچھی طرح سمجھ رہے ہیں کہ کون ان کادوست ہے اور کون سے فیوڈل سندھ کے نام پر ان کوغلام بنائے ہوئے ہے ۔ یہ قائدتحریک جناب الطاف حسین کی ہی 36سالہ طویل سیاسی جدوجہدکانتیجہ ہے کہ آج وڈیرانہ نظام اور موروثی سیاسی کلچر ایک گالی بن گیا ہے۔ رابطہ کمیٹی نے مزید کہا کہ ایم کیوایم پر20سال کی حکمرانی کابہتان لگانے والے قوم کواس بات کاجواب دیں کہ پیپلزپارٹی 43سال سے پورے ملک میں اورخصوصاًسندھ میں مکمل اختیارکے ساتھ حکومت کررہی ہے، لیکن ان 43سالوں میں پیپلزپارٹی نے سندھ کیلئے کیاکیا؟ اس نے سندھ میں کتنے اسکول، کالج، یونیورسٹیاں اورتعلیمی ادارے قائم کئے؟ کونساسڑکوں کاجال بچھایا ہے؟پیپلزپارٹی نے 43سالوں میں لاڑکانہ اورنوڈیروکیلئے کیاکیاہے؟ سند ھ کے غریب ہاری آج بھی ٹوٹی جھونپڑیوں میں بھوک پیاس کی زندگی گزار رہے ہیں۔رابطہ کمیٹی نے کہاکہ ایم کیوایم کوجب لوکل گورنمنٹ کی شکل میں کراچی کااقتداراوراختیارملاتوایم کیوایم نے بڑے پیمانے پر ترقیاتی کام کرکے پانچ سالوں میں کراچی کانقشہ بدل کررکھ دیاجبکہ پیپلزپارٹی نے محض کراچی دشمنی میں کراچی کومزیدترقی دیناتودورکی بات ہے ، کراچی کوتباہی سے دوچارکیا ہے۔ پیپلز پارٹی کی حکومت سندھ نے کراچی کی ترقی کے بنیادی شہر ی اداروں تک کواپنی تحویل میں لیکر ان اداروں اورکراچی شہرکے انفرا اسٹرکچرکو تباہ کردیا ہے ۔ کراچی کے عوام اچھی طرح جانتے ہیں کہ پیپلزپارٹی نے کراچی کوسوائے لاشوں، آنسوؤں اورمحرومیوں کے سوا کچھ نہیں دیا۔وفاقی حکومت سے کراچی کا پیکج مانگنے والے بتائیں کہ پیپلز پارٹی کی سندھ حکومت کراچی کوکتنافنڈدے رہی ہے؟ حکومت سندھ توکراچی کے بلدیاتی اداروں کے ملازمین کوتنخواہیں حتیٰ کہ کچرا گاڑیوں کے پیٹرول کے پیسے دینے کیلئے بھی تیارنہیں ہے۔ رابطہ کمیٹی نے مزید کہا کہ وزارت صحت کی آڑمیں ایم کیوایم پر تنقید کرنے والے جواب دیں کہ باقی تمام وزارتوں کے طفیل کیاسندھ میں دودھ کی نہریں بہہ رہی ہیں؟اس بارے میں سندھ کے غریب عوام جواب طلبی کس سے کریں؟ وزارتِ صحت کو بھی وزیرصحت نہیں بلکہ عملاً پیپلزپارٹی کی اعلیٰ شخصیات چلارہی ہیں،وزیرصحت کوایک ملازم کی تقرری یاتبادلے تک کااختیارنہیں ہے اور وزارتِ صحت کے بجٹ کو بھی آٹے اور نمک میں تقسیم کر دیا گیا ہے ۔ رابطہ کمیٹی نے اپنے بیان میں یہ بھی کہا کہ ایک طرف تو بلاول زرداری مل کر چلنے کی بات کرتے ہیں اور دوسری طرف ایم کیو ایم کو مطعون بھی کرتے ہیں جو کھلی دو عملی ہے ۔

12/8/2016 6:01:26 AM