Altaf Hussain  English News  Urdu News  Sindhi News  Photo Gallery
International Media Inquiries
+44 20 3371 1290
+1 909 273 6068
[email protected]
 
 Events  Blogs  Fikri Nishist  Study Circle  Songs  Videos Gallery
 Manifesto 2013  Philosophy  Poetry  Online Units  Media Corner  RAIDS/ARRESTS
 About MQM  Social Media  Pakistan Maps  Education  Links  Poll
 Web TV  Feedback  KKF  Contact Us        

جس معاشرے میں ہم رہتے ہیں وہاں کی عدالتیں اندھی ہی نہیں بلکہ گونگی، بہری بھی ہیں، ڈاکٹر خالد مقبول صدیقی


جس معاشرے میں ہم رہتے ہیں وہاں کی عدالتیں اندھی ہی نہیں بلکہ گونگی، بہری بھی ہیں، ڈاکٹر خالد مقبول صدیقی
 Posted on: 10/2/2014
جس معاشرے میں ہم رہتے ہیں وہاں کی عدالتیں اندھی ہی نہیں بلکہ گونگی، بہری بھی ہیں، ڈاکٹر خالد مقبول صدیقی
الطاف حسین نے فرسودہ نظام کے دیمک زدہ راستے کو اختیار کرنے کے بجائے حق پرستی کا راستہ اختیار کیا
حق پرستی کا یہ راستہ مشکل اور دشوار گزار ضرور ہے جو قربانیاں مانگتا ہے لیکن یہی راستہ ہمیں منزل کی طرف لے جائیگا
قائد تحریک کی سیاسی بصیرت اور عملی جدوجہد کی بدولت ہی پاکستان میںآج خواتین کے پاس وہ شعور ہے جسکی انہیں ضرورت ہے
خواتین کے حقوق اور انہیں ظاہری تحفظ کے لئے قائدتحریک جناب الطاف حسین کی عملی جدوجہد ایک مثال ہے
عورت محفوظ ہوگی تو پاکستان محفوظ ہوگا اور خواتین کو تحفظ اور انہیں ان کے جائز حقوق دیئے بغیر پاکستان ترقی نہیں کرسکتا، کشور زہرا
یہ حقیقت ہے کہ ہم جاگیردارانہ نظام کے تلے دبے ہوئے ہیں، جسٹس (ر) ماجدہ رضوی
شعبہ خواتین کے زیر اہتمام خاتون ایڈوکیٹ سکندر کی ترتیب و تدوین کردہ کتاب ’’پاکستانی عورت کے قانونی حقوق اور معاشرتی تحفظ‘‘ کی تقریب رونمائی سے ڈاکٹر خالد مقبول صدیقی، کشور زہرا، ماجدہ رضوی، مہناز رحمن، شیرالہ نشاط ملک، ناہید بیگم اور دیگر کا خطاب
کراچی:۔۔۔2؍اکتوبر2014ء
متحدہ قومی موومنٹ شعبہ خواتین کے زیراہتمام معروف خاتون ایڈووکیٹ محترمہ سکندر کی ترتیب وتدوین کردہ کتاب’’پاکستانی عورت کے قانونی حقوق اور معاشرتی تحفظ‘‘ کی رونمائی کی گئی۔ اس سلسلے میں بدھ کی شام عزیزآبادکے لال قلعہ گراؤنڈمیں ایم کیوایم کی جانب سے سادہ پررونق تقریب منعقدکی گئی۔تقریب میں سندھ ہائی کورٹ کی پہلی خاتون جج جسٹس(ر)ماجدہ رضوی نے بطورمہمان خصوصی شرکت کی اورخواتین کے حقوق کے حوالے سے آگاہی فراہم کرتے ہوئے ’’ پاکستانی عورت کے قانونی حقوق اور معاشرتی تحفظ ‘‘کی رونمائی کی۔اس موقع پرایم کیوایم کے رکن رابطہ کمیٹی سیدامین الحق،ایم کیوایم شعبہ خواتین کی ذمہ داران وکارکنان کے علاوہ خواتین کی بہت بڑی تعدادموجودتھی۔کتاب کی تقریب رونمائی سے ڈاکٹر خالدمقبول صدیقی نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ پاکستان کی سیاست میں ایم کیوایم شجرممنوعہ سمجھی جاتی ہے،قائدتحریک جناب الطاف حسین نے موروثی سیاست اورفرسودہ جاگیردارانہ نظام کے دیمک زدہ راستے کواختیارکرنے بجائے حق پرستی کاوہ راستہ اختیارکیاجونہ صرف مشکل اوردشوارہے بلکہ یہ راستہ قربانیاں بھی مانگتاہے لیکن یہ وہی راستہ ہے جوعوام میں شعوربیداری پیدا کرکے انہیں منزل کی طرف لے جاتاہے ۔انہوں نے کہا کہ قائدتحریک الطاف حسین کی سیاسی بصیرت اورعملی جدوجہدکی بدولت ہی پاکستان میںآج خواتین کے پاس وہ شعورہے جس کی انہیں ضرورت ہے اورجس کی کمی کو شدت سے محسوس کیاجارہاتھا۔خواتین کے حقوق اورانہیں ظاہری تحفظ کے لئے قائدتحریک جناب الطاف حسین کی عملی جدوجہد ایک سیمبل ہے۔ انہوں نے کہاکہ ہم جس معاشرے میں رہتے ہیں وہاں کی عدالتیں اندھی ہی نہیں بلکہ گونگی ،بہری بھی ہیں، مضبوط معاشروں میں کمزور لوگوں کے حقوق زیادہ ہوتے ہیں،یورپ ممالک میں جہاں کی عورت کو اس کی آزادی ،رویئے اور کردارکوسامنے رکھ کرحدف تنقید بناتے ہیں وہاں کوئی بھی شخص عورت کی مرضی کے بغیر اس کو انگلی بھی نہیں لگاسکتا۔ انہوں نے کہا کہ افسوس کے پاکستان کی آزادی کو66  سال گزرنے کے باوجودآج بھی یہ ملک جاگیردارانہ نظام کے چنگل میں ہے جہاں عورت کوایک معمولی شئے سے زیادہ حیثیت نہیں دی جاتی ،ہمارے معاشرے میں عورتوں کی خریدوفرخت کی جاتی ہے ،انہیں ونی اورکاروکاری جیسی فرسودہ رسومات کی بھینٹ چڑھا دیا جاتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ بہترین معاشرہ وہ ہوتاہے جس میں ظلم کاشکارلوگ ظالم کے خلاف کھڑے ہوں اورالطاف حسین کی تعلیمات اور فکروفلسفہ اسی بات کی عکاسی کرتاہے کہ لوگ اپنے حقوق کے لئے آگے آئیں، ایک ایسے معاشرے میں جس میں انسان اپنی انفرادی مفادات کواجتماعی مفادات پرفوقیت دے تووہ معاشرتی بگاڑکاسبب بنتاہے۔شعبہ خواتین کی انچارج وحق پرست رکن قومی اسمبلی محترمہ کشور زہرا نے کہا کہ عورت محفوظ ہوگی توپاکستان محفوظ ہوگا اور خواتین کوتحفظ اورانہیں ان کے جائزحقوق دیئے بغیر پاکستان ترقی نہیں کرسکتا، خواتین کو تحفظ دیئے بغیراس وقت پاکستان جن حالات کاشکارہے اسے اس سے بچاناایک خواب سے زیادہ نہیں۔انہوں نے سوال کیا کہ ہمارے معاشرے میں خواتین کاحق کیاہے؟ ۔انہوں نے کہاکہ ایم کیوایم واحدجماعت ہے جس نے قائدتحریک الطاف حسین کے فکر وفلسفے پرعمل پیراہوکرپاکستان میں خواتین کونہ صرف ہر طرح کاتحفظ فراہم کیاہے بلکہ انہیں معاشرے میں برابری کاحق دلانے کے لئے اسمبلی سے تحفظ حقوق نسواں کا قانون بھی پاس کروایا۔انہوں نے کتاب کی ترتیب وتدوین پرمحترمہ سکندر ایڈوکیٹ کوقائدتحریک جناب الطاف حسین کی جانب سے مبارکباداورخراج تحسین پیش کیا۔ تقریب کی مہمان خصوصی جسٹس (ر)ماجدہ رضوی نے اختتامیہ پیش کیااورکہاکہ میں خود ایسے گھرمیں پیداہوئی جہاں عورت اورمردمیں کوئی فرق نہیں سمجھا جاتا، میرے والد نے مجھے آگے بڑھایا اور ہر مقام پر میرا حوصلہ بڑھاتے ہوئے میری رہنمائی کی۔ انہوں نے کہا کہ میں نے اپنی جدوجہد کے آغازمیں طرح طرح کے نشیب وفرازکا سامنا کیا مگر ہمت نہ ہاری اورگھر گھر جاکر خواتین کوان کے حقوق کے بارے میں بتایاکہ ان کے حقوق ہیں کیا۔ انہوں نے کہا کہ میں سیاسی بات نہیں کرونگی لیکن یہ بھی حقیقت ہے کہ ہم جاگیردارانہ نظام کے تلے دبے ہوئے ہیں ، ہمارا72کادستورہے جس میں خواتین کوتحفظ کے حوالے سے وہ آرٹیکل بھی ہیں جوہمارے لئے بہت ضروری ہیں۔انہوں نے خواتین کوحاصل حقوق سے خواتین کوآگاہ کرتے ہوئے کہاکہ جب خواتین کے اپنے حقوق کا معلوم ہی نہیں ہوگااور خواتین اپنے حقوق کے لئے کھڑی ہی نہیں ہونگی اوربتائیں گی نہیں کہ ان کے حقوق ہیں کیا تو خواتین اس دوسروں کوآگاہ کیسے کریں گی۔ تقریب سے عورت فاؤنڈیشن کی ریزیڈنٹ ڈائریکٹر محترمہ مہنازرحمن ،رفعت ایڈووکیٹ اور دیگر نے بھی خطاب کیا۔

12/6/2016 1:46:58 PM