Altaf Hussain  English News  Urdu News  Sindhi News  Photo Gallery
 
 Events  Blogs  Fikri Nishist  Study Circle  Songs  Videos Gallery
 Manifesto 2013  Philosophy  Poetry  Online Units  Media Corner  RAIDS/ARRESTS
 About MQM  Social Media  Pakistan Maps  Education  Links  Poll
 Web TV  Feedback  KKF  Contact Us        

سانحہ قصبہ علی گڑھ 14دسمبر1986ء جنرل ضیاء الحق کی فوجی حکومت اور آئی ایس آئی کی تیار کردہ سازش کاحصہ تھا۔الطاف حسین


سانحہ قصبہ علی گڑھ  14دسمبر1986ء جنرل ضیاء الحق کی فوجی حکومت اور آئی ایس آئی کی تیار کردہ سازش کاحصہ تھا۔الطاف حسین
 Posted on: 12/14/2021
سانحہ قصبہ علی گڑھ  14دسمبر1986ء جنرل ضیاء الحق کی فوجی حکومت اور آئی ایس آئی کی تیار کردہ سازش کاحصہ تھا۔الطاف حسین
سفاک دہشت گردوں نے گھروں میں گھس کروحشیانہ فائرنگ کی، معصوم وبے گناہ مہاجرنوجوانوں، بزرگوں، خواتین اوربچوں پر بیدریغ گولیاں برسائیں، بہنوں، بیٹیوں کی آبروریزی کی، گھروں میں لوٹ مار کی ،کیمیکل چھڑک کر گھروں کو آگ لگائی اورعلاقوں کی معصوم مہاجرخواتین اوربچوں کوزندہ جلایا
 شہرمیں تعینات فوج کوایک رات قبل ہی تمام چوکیوں سے ہٹالیا گیاتھا
درندہ صفت حملہ آوروں کوقصبہ کالونی اورعلی گڑھ کالونی پر حملے اور وحشت وبربریت کاکھیل کھیلنے اورقتل وغارتگری کاپورا موقع فراہم کیاگیا
 اتنے بڑے قتل عام میں ملوث کسی بھی قاتل کوکوئی سزانہیں دی گئی 
سانحہ قصبہ علی گڑھ پاکستان کی تاریخ کاسیاہ ترین باب ہے جسے کسی بھی قیمت پر فراموش نہیں کیاجاسکتا۔ سانحہ قصبہ علی گڑھ کے شہداکی 35ویں برسی پر بیان

لندن  …  14 دسمبر 2021ئ
ایم کیوایم کے بانی وقائدجناب الطاف حسین نے کہاہے کہ سانحہ قصبہ علی گڑھ  14دسمبر1986ء پاکستان کی تاریخ کاسیاہ ترین باب ہے جسے کسی بھی قیمت پر فراموش نہیں کیاجاسکتا۔ سانحہ قصبہ علی گڑھ کے شہداکی 35ویں برسی پر اپنے بیان میں جناب الطاف حسین نے کہاکہ 14دسمبر 1986ء وہ سیاہ دن ہے جب جدیدوخودکارہتھیاروں ، گولہ بارود اورخطرناک کیمیکل سے مسلح دہشت گردوں نے کراچی کے علاقوں قصبہ کالونی اورعلی گڑھ کالونی اورنگی ٹاؤن پرپہاڑیوں سے حملہ کیا، سفاک دہشت گردوں نے ان علاقوں کے گھروں میں گھس کروحشیانہ فائرنگ کی، معصوم وبے گناہ مہاجرنوجوانوں، بزرگوں، خواتین اوربچوں پر بیدریغ گولیاں برسائیں، بہنوں، بیٹیوں کی آبروریزی کی، گھروں میں لوٹ مار کی ،کیمیکل چھڑک کر گھروں کو آگ لگائی اورعلاقوں کی معصوم مہاجرخواتین اوربچوں کوزندہ جلایا۔ جناب الطاف حسین نے کہاکہ وحشت وبربریت ، خونریزی اورقتل وغارتگری کایہ سفاکانہ کھیل چھ گھنٹوں تک جاری رہا جس کے نتیجے میں 300سے زائد معصوم وبے گناہ مہاجروں کوبیدردی اورسفاکی سے خون میں نہلادیا گیا لیکن فوجی حکومت، انتظامیہ، فوج، پولیس سمیت کوئی ریاستی ادارہ قصبہ کالونی اورعلی گڑھ کالونی اورنگی ٹاؤن کے نہتے اورمعصوم مہاجروں کوتحفظ فراہم کرنے نہیں پہنچا۔ یہ سب کچھ اس وقت کی جنرل ضیاء الحق کی فوجی حکومت اور آئی ایس آئی کی تیار کردہ سازش کاحصہ تھا اسی لئے شہرمیں تعینات فوج کوایک رات قبل ہی تمام چوکیوں سے ہٹالیا گیاتھا اوردرندہ صفت حملہ آوروں کوقصبہ کالونی اورعلی گڑھ کالونی پر حملے اور وحشت وبربریت کاکھیل کھیلنے اور خونریزی اورقتل وغارتگری کرنے کاپورا موقع فراہم کیاگیا۔ جناب الطاف حسین نے کہاکہ قتل عام کرنے والوں کو جنرل ضیا کی فوجی حکومت اورآئی ایس آئی کی مکمل سرپرستی حاصل تھی اسی لئے اتنے بڑے قتل عام میں ملوث کسی بھی قاتل کوکوئی سزانہیں دی گئی اورسانحہ کے متاثرین کو35سال گزر جانے کے باوجود بھی انصاف نہیں مل سکا۔ جناب الطاف حسین نے کہاکہ سانحہ علی گڑھ پاکستان کے ماتھے پر وحشت وبربریت کاایساسیاہ داغ ہے جسے نہ مٹایا جاسکتاہے اورنہ ہی فراموش کیاجاسکتاہے۔ جناب الطاف حسین نے سانحہ علی گڑھ کے شہیدوں کوخراج عقیدت پیش کرتے ہوئے دعاکی کہ اللہ تعالیٰ تمام شہیدوں کی مغفرت فرمائے، انہیں جنت الفردوس میں جگہ دے اور قاتلوں پر اپناعذاب نازل کرے۔ آمین

٭٭٭٭٭                   



1/17/2022 4:24:51 PM