Altaf Hussain  English News  Urdu News  Sindhi News  Photo Gallery
 
 Events  Blogs  Fikri Nishist  Study Circle  Songs  Videos Gallery
 Manifesto 2013  Philosophy  Poetry  Online Units  Media Corner  RAIDS/ARRESTS
 About MQM  Social Media  Pakistan Maps  Education  Links  Poll
 Web TV  Feedback  KKF  Contact Us        

ہم اپنی قوم کی بقاء اوراپنی آنے والی نسلوں کی باعزت زندگی چاہتے ہیں۔الطاف حسین


 ہم اپنی قوم کی بقاء اوراپنی آنے والی نسلوں کی باعزت زندگی چاہتے ہیں۔الطاف حسین
 Posted on: 6/14/2021

ہم اپنی قوم کی بقاء اوراپنی آنے والی نسلوں کی باعزت زندگی چاہتے ہیں۔الطاف حسین
ہم کسی سے اس کاحق چھیننا نہیں چاہتے ، ہم اپناحق چاہتے ہیں
اپنے حق اورباعزت زندگی کیلئے جدوجہد کرناہماراحق ہے ،اس حق سے ہمیں کوئی محروم نہیں کرسکتا
 اگرہندوستان کے مسلمان تقسیم نہ ہوتے تو وہ آج انڈیامیںایک بڑی طاقت ہوتے
 اسلام کے نام پربنائے گئے وطن پر آج پنجاب کے جرنیلوں اورافسرشاہی نے قبضہ کررکھاہے
 آج ہرباشعورشخص یہ سوچنے پر مجبور ہے کہ ہمیں پاکستان کے نام پر دھوکہ دیاگیا
 آج سب مظلوم اس قبضہ سے آزادی چاہتے ہیں
ایم کیوایم ساؤتھ افریقہ کے زیراہتمام اے پی ایم ایس او کے یوم تاسیس کے اجتماع سے فون پر خطاب 

لندن  …  14  جون
2021ئ
یہ اجتماع ساؤتھ افریقہ کے ڈربن اورسینٹ پیٹرمیزبرگ چیپٹرز نے مشترکہ طورپرمنعقد کیاتھا۔اجتماع میں کارکنوں ، ان کے اہل خانہ ، نوجوانوں، بزرگوں، خواتین اوربچوںکی بڑی تعداد نے شرکت کی۔ یوم تاسیس کے اجتماع میں مقامی عمائدین نے بھی شرکت کی ۔ جناب الطاف حسین نے کہاکہ ہم نے اپنے حق کے لئے آواز بلند کی توہمیں کچلنے کے لئے ہمارے خلاف ریاستی آپریشن شروع کردیاگیاجوآج تک جاری ہے، اس آپریشن میں ہمارے ہزاروں ساتھی ہم سے چھین لئے گئے، ہمارے ہزاروں ساتھیوںکوگرفتارکرکے لاپتہ کردیاگیا، جن کے بارے میں ہمیں آج تک یہ پتہ نہیں چل سکاکہ ان میں سے کتنے زندہ ہیں اور کتنے شہیدکردیے گئے۔ریاستی آپریشن میں اتنی بڑی تعدادمیں ساتھی شہید کئے گئے کہ ہمیں عزیزآبادکے علاقے یاسین آباد میں شہداء کاقبرستان بناناپڑا، وہ قبرستان بھی چھوٹاپڑگیا اوراس کی مزیدتوسیع کی گئی ، وہ حصہ بھی شہیدوںسے بھرگیا۔ ریاست نے ایم کیوایم کے کارکنوںکاملک میں جینامشکل کردیاتوتحریک نے ساتھیوں کویہی پیغام دیا کہ وہ جانیں بچانے کیلئے جہاں جگہ ملے وہاں چلے جائیں۔ریاستی آپریشن کے دوران سینکڑوں کی تعدادمیں ساتھیوںکواپنی جانیں بچانے کیلئے مختلف ممالک میں جلاوطن ہوناپڑا، بہت سے ساتھیوںکوساؤتھ افریقہ آنا پڑا۔ 
جناب الطاف حسین نے کہاکہ قوموں کوتقسیم کردیاجائے تواس سے طاقت بھی تقسیم ہوجاتی ہے ۔ انگریزوں نے ایک سازش کے تحت ہندوستان کے عوام کی طاقت کوتقسیم کرنے کیلئے ہندوستان کے مسلمانوںکو اسلام کے نام پر جھوٹا دوقومی نظریہ پیش کیا،کہا گیاکہ ہندو الگ اورمسلمان الگ ہیں۔دوقومی نظریہ کے نام پر پاکستان بنایاگیااورپھر پاکستان بھی پاکستان اوربنگلہ دیش میں تقسیم ہوگیا۔اس طرح مسلمانوں کی طاقت تین حصوں میں تقسیم ہوگئی ۔ اگرہندوستان کے مسلمان تقسیم نہ ہوتے اور ایک ہوتے تو وہ آج انڈیامیںایک بڑی طاقت ہوتے۔جناب الطاف حسین نے کہاکہ اسلام کے نام پر ہندوستان کو توڑنا ، مسلمانوں کی طاقت کوتقسیم کرنااورانہیں کمزورکرنامسلمانوں سے ہمدردی نہیںبلکہ اسلام کے نام پر مسلمانوں کو بیوقوف بنایا گیا ۔انہوں نے کہاکہ آج بنگالی مسلمان پاکستانیوںسے زیادہ بہتر زندگی گزار رہے ہیں۔جناب الطاف حسین نے کہاکہ اسلام کے نام پربنائے گئے وطن پر آج پنجاب کے جرنیلوں اورافسرشاہی نے قبضہ کررکھاہے، آج ہرباشعورشخص یہ سوچنے پر مجبور ہے کہ ہمیں پاکستان کے نام پر دھوکہ دیاگیا۔اسی لئے آج سب اس قبضہ سے آزادی چاہتے ہیں۔ ہمیں اپناآزادوطن چاہیے جہاں ہم انڈیا کے مسلمانوں کے پاس آزادی سے جاسکیں، بنگلہ دیش سے ہمارے تعلقا ت اچھے ہوں۔ جناب الطاف حسین نے کہاکہ ہم نہیں چاہتے کہ ہمارے نوجوانوں کی نسلوںکوختم کردیاجائے ، ہماری بہنوں بیٹیوںکو کنیزیں بنالیا جائے اور ہمارے بچے غلامی کی ذلت آمیز زندگی بسرکریں۔ ہم اپنی قوم کی بقاء اوراپنی آنے والی نسلوں کی باعزت زندگی چاہتے ہیں۔ ہم کسی سے اس کاحق چھیننا نہیں چاہتے ، ہم اپناحق چاہتے ہیںاوراپنے حق اورباعزت زندگی کیلئے جدوجہد کرناہماراحق ہے اوراس حق سے ہمیں کوئی محروم نہیں کرسکتا۔انہوں نے ساؤتھ افریقہ کے کارکنوںسے کہاکہ جوساتھی غیرفعال ہوگئے ہیں وہ بھی دوبارہ تحریک میں فعال ہوجائیں اوراپنے اندرویسا ہی جذبہ پیداکریں جیساپہلے تھاکہ ہمیں اپنے مقصدکے لئے اپنی جدوجہد جاری رکھناہے اورتحریک کواس کی منزل تک پہنچاناہے۔ اس موقع پر ایم کیوایم کی سینٹرل آرگنائزنگ کمیٹی کے رکن علی تراوش اور ساؤتھ افریقہ کے سینٹرل آرگنائزرمحمدیوسف نے بھی خطاب کیا۔اجتماع میں ساؤتھ افریقہ کی حکمراں جماعت افریقہ نیشنل کانگریس کی رہنمااورمقامی کونسلر محترمہ نجمہ احمد نے بھی شرکت کی ۔ 
٭٭٭٭٭












7/27/2021 8:10:47 PM