Altaf Hussain  English News  Urdu News  Sindhi News  Photo Gallery
 
 Events  Blogs  Fikri Nishist  Study Circle  Songs  Videos Gallery
 Manifesto 2013  Philosophy  Poetry  Online Units  Media Corner  RAIDS/ARRESTS
 About MQM  Social Media  Pakistan Maps  Education  Links  Poll
 Web TV  Feedback  KKF  Contact Us        

ہم کسی کاحق چھیننا نہیں چاہتے ، ہم اپناحق چاہتے ہیں سندھیوں اورمہاجروںنے فیصلہ کرلیاہے کہ وہ اپنے حق کیلئے ملکرجدوجہدکریںگے الطاف حسین


ہم کسی کاحق چھیننا نہیں چاہتے ، ہم اپناحق چاہتے ہیں سندھیوں اورمہاجروں نے فیصلہ کرلیاہے کہ وہ اپنے حق کیلئے ملکرجدوجہدکریںگے  الطاف حسین
 Posted on: 6/11/2021

سندھ اوربلوچستان کے عوام آزادی چاہتے ہیں، الطاف حسین
ہم کسی کاحق چھیننا نہیں چاہتے ، ہم اپناحق چاہتے ہیں
سندھیوں اورمہاجروں نے فیصلہ کرلیاہے کہ وہ اپنے حق کیلئے ملکرجدوجہدکریںگے
سندھ کوآزادی ملی تویہاں سے وڈیرہ شاہی کابھی خاتمہ ہوگا
 پی ایم ایس او کے 43ویں یوم تاسیس کے موقع پر خطاب 

لندن … 11  جون 2021ئ
ایم کیوایم کے بانی وقائدجناب الطاف حسین نے کہاہے کہ آزادی انسان کاپیدائشی حق ہے اورسندھ اور بلوچستان کے عوام بھی اپنے پیدائشی حق کے مطابق آزادی چاہتے ہیں، ہم کسی کاحق چھیننا نہیں چاہتے، ہم اپناحق چاہتے ہیں، ہم سندھ کے غریب عوام کوجاگیرداروںاوروڈیروںسے نجات دلانا چاہتے ہیں، سندھ کوآزادی ملی تویہاں سے وڈیرہ شاہی کابھی خاتمہ ہوگا۔ انہوں نے یہ بات اے پی ایم ایس او کے 43ویں یوم تاسیس کے موقع پرلندن میں ایم کیوایم یوکے کے زیراہتمام منعقدہ اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔ ان کایہ خطاب سوشل میڈیاکے ذریعے پاکستان سمیت دنیابھرمیں براہ راست نشر کیاگیا۔ جناب الطاف حسین نے کارکنان کو یوم تاسیس کی مبارکباد پیش کی اوراپنے خطاب میں جامعہ کراچی میں آل پاکستان مہاجراسٹوڈینٹس آرگنائزیشن کے قیام کے ابتدائی ایام کی تاریخ اوراس وقت کی جنرل ضیاء کی مارشل لاء حکومت کی زیرسرپرستی جماعت اسلامی اوراس کی ذیلی تنظیم اسلامی جمعیت طلبہ کے مسلح حملوں کی تفصیلات بھی بیان کیں، انہوںنے کہاکہ طلبہ میں اے پی ایم ایس او کی تیزی سے بڑھتی ہوئی مقبولیت سے بوکھلاکر جمعیت نے3فروری 1981ء کواے پی ایم ایس او پر حملے کئے ،ہم پر تعلیمی اداروں کے دروازے بندکردیے گئے جس کے بعدہم نے علاقوں میں کام شروع کیا، اے پی ایم ایس او نے مہاجرقومی موومنٹ کوجنم دیا جوآگے چل متحدہ قومی موومنٹ بنی۔ ایم کیوایم نے گھروںکے کمروں اور چھتوںسے ہوتے ہوئے پہلے گلیوںاورسڑکوںپر جلسے کئے پھر میدانوں میں اوربالآخر8 اگست 1986ء کوکراچی کے نشترپارک میں پہلاعوامی جلسہ کیا۔جونشترپارک کی تاریخ کاسب سے بڑا جلسہ تھا۔ ایم کیوایم نے شرکاء کی تعداد کے لحاظ اتنے بڑے بڑے جلسے کئے جوپاکستان کی تاریخ میں کسی جماعت نے نہیںکئے ، حتیٰ کہ قائداعظم اور مہاتما گاندھی نے بھی نہیںکئے ہوںگے۔ جناب الطاف حسین نے کہاکہ ایم کیوایم نے ملک میں پہلی بار غریب ومتوسط طبقہ سے تعلق رکھنے والے نوجوانوںکو اسمبلیوںمیں بھیجا، انہیں بڑے بڑے ایوانوں میں جاگیرداروں، وڈیروں، سرمایہ داروں کے برابرمیںبٹھایا جس کاغریب اورمڈل کلاس عوام تصورنہیں کرسکتے تھے ۔انہوںنے کہاکہ ایم کیوایم نے سندھ کے گاؤںگھوٹوں اورقصبوںمیں بھی اپنے یونٹس قائم کئے جہاں کے تمام عہدیدارسندھی تھے، ہم نے سندھی نوجوانوںکوبھی سینیٹ، قومی اورصوبائی اسمبلی میں بھیجا۔ انہوں نے کہاکہ ایم کیوایم پاکستان کے جاگیردارانہ نظام کے خلاف ایک چیلنج بن گئی تھی اسی لئے فوج نے اس کوپوری ریاستی طاقت کے ذریعے کچلنے کی کوشش کی ۔
 جناب الطاف حسین نے کہاکہ پاکستان کاالمیہ یہ ہے کہ یہاں نوجوان نسل کومسخ شدہ تاریخ پڑھائی جاتی ہے ، یہاں برصغیر کی آزادی کے لئے جدوجہدکرنے والے اکابرین سے نئی نسل کوروشناس نہیں کرایاجاتا ، سیدالاحرار مولاناحسرت موہانی جنہوں نے آزادی کے لئے قیدوبندکی صعوبتیں برداشت کیں، جیلوں میں چکی پیسی، قربانیاں دیں، نئی نسل ان سے ناواقف ہے، سندھ کے بزرگ رہنماجی ایم سید جنہوں نے  سندھ اسمبلی کے اسپیکر کی حیثیت سے ووٹ دیکر قیام پاکستان کے حق میںقراردادمنظورکی انہیں غدارقرار دیاجاتاہے کیونکہ پاکستان کی فوجی اشرافیہ نے ان کے بارے میں یہ پروپیگنڈہ کیا۔ جی ایم سیدنے سندھ کے لئے حق مانگااورسندھ کوغلامی سے نجات دلانے کے لئے آوازبلند کی ۔ جناب الطاف حسین نے کہاکہ سندھ پاکستان کاوہ صوبہ ہے جس کادارالخلافہ کراچی ملک کو70فیصد ریونیودیتاہے جس سے پوراملک ہی نہیں بلکہ فوج ، رینجرز اورتما م ادارے پلتے ہیں پھربھی کراچی اور سندھ کواس کا حق نہیں ملتا ۔ انہوں نے کہا کہ فوج نے انگریزوںکی لڑاؤ اورحکومت کرو کی پالیسی کے تحت ایک سازش کے ذریعے سندھ میں سندھیوںاورمہاجروںکوآپس میں لڑایا، سندھ میںبھٹوکے ذریعے کوٹہ سسٹم اورایسے غیرمنصفانہ اقدامات کرائے جس سے سندھ میں شہری اوردیہی کی خلیج پیداہوئی لیکن اب سندھ کے مستقل باشندوں سندھیوںاورمہاجروںنے اس سازش کوسمجھ لیاہے اورانہوں نے یہ فیصلہ کرلیاہے کہ وہ اب آپس میںنہیں لڑیںگے اوراپنے حق کیلئے ملکرجدوجہدکریںگے۔جناب الطاف حسین نے کہاکہ ہم وڈیروںجاگیرداروںسے سندھ کونجات دلائیںگے، سندھ کی آزادی کاپھل وڈیروںاورجاگیرداروں کو نہیں بلکہ اس کیلئے جدوجہد کرنے اورقربانیاں دینے والوںکوملے گا، سندھ کے وڈیروں کے بارے میں سندھ کے عوام فیصلہ کریںگے،سندھ سے وڈیرہ شاہی ختم کی جائے گی، سندھ میں زمین کی حد مقرر کی جائے گی اوراس مقررہ حدسے زیادہ زمین جس کے پاس ہوگی اسے ہاریوںمیں تقسیم کردیا جائے گا۔ انہوں نے سندھ کے ڈاکوؤںسے بھی کہاکہ وہ جرائم کایہ راستہ ترک کردیں بلکہ اپنی توانائی کو سندھ کی آزاد ی کی جدوجہد کیلئے استعمال کریں تاکہ جان بھی جائے توشہید کہلائیں۔ انہوں نے سندھ کے مستقل باشندوں کوایک بارپھرمخاطب کرتے ہوئے کہاکہ ان کاجینامرنا، کھاناکمانا سندھ سے وابستہ ہے لہٰذا وہ دوریاں ختم کرکے ایک ہوجائیں اورملکرجدوجہدکریں۔ جناب الطاف حسین نے کہا کہ ہم بلوچوں کی جدوجہد کی حمایت کرتے ہیں، ہم ہم غریب پنجابیوں کوبھی جاگیرداروں کے چنگل سے نجات دلاناچاہتے ہیں، ہم پشتونوں، ہزارے وال ، گلگتی، بلستانی اورتمام مظلوم قوموں کے حقو ق کی حمایت کرتے ہیں۔ انہوں نے مہاجروں، سندھیوںاورتمام عوام کواے پی ایم ایس او کے یوم تاسیس کی مبارکباد پیش کی اورتمام ترریاستی جبر کے باوجود کراچی اوردیگرشہروںمیں تحریک کی چاکنگ کرنے اوریوم تاسیس کی تقریبات منانے پرانہیں سیلوٹ پیش کیا۔ 

٭٭٭٭٭



7/27/2021 2:35:51 AM