Altaf Hussain  English News  Urdu News  Sindhi News  Photo Gallery
International Media Inquiries
+44 20 3371 1290
+1 909 273 6068
[email protected]
 
 Events  Blogs  Fikri Nishist  Study Circle  Songs  Videos Gallery
 Manifesto 2013  Philosophy  Poetry  Online Units  Media Corner  RAIDS/ARRESTS
 About MQM  Social Media  Pakistan Maps  Education  Links  Poll
 Web TV  Feedback  KKF  Contact Us        

ایم کیو ایم کے وفد کی دبئی میں پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین اور سابق صدر جناب آصف علی زرداری سے ملاقات


 Posted on: 10/25/2013
ایم کیو ایم کے وفد کی دبئی میں پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین اور سابق صدر جناب آصف علی زرداری سے ملاقات
ملاقات میں گورنر سندھ ڈاکٹر عشر ت العباد اور پیپلز پارٹی کے نائب صدر سینیٹر رحمان ملک بھی موجود تھے
وفد میں ڈپٹی کنوینر ز ندیم نصرت ، ڈاکٹر خالد مقبول صدیقی ، سینیٹر بابر غوری اور رکن سندھ اسمبلی عادل صدیقی شامل تھے
ملک کی سیاسی جماعتوں میں مختلف سیاسی امور پر روابط اور مشاورت جمہوری عمل کا حصہ ہیں ، ملاقات میں اتفاق
ان قیاس آرائیوں میں کوئی حقیقت نہیں ہے کہ ایم کیو ایم نے سندھ حکومت میں شمولیت کا فیصلہ کرلیا ہے
آصف علی زرداری سے ملاقات میں بھی اس حوالہ سے کوئی گفتگو نہیں کی گئی ، اعلامیہ
دبئی :۔۔25؍ اکتوبر 2013ء
متحدہ قومی موومنٹ کے ایک وفد نے جمعہ کی شام دبئی میں پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین اور سابق صدر جناب آصف علی زرداری سے ملاقات کی۔ اس موقع پر گورنر سندھ ڈاکٹر عشرت العباد اور پیپلز پارٹی کے نائب صدر سینیٹر رحمان ملک بھی موجود تھے ۔ ایم کیو ایم کے وفد میں رابطہ کمیٹی کے ڈپٹی کنوینرز ندیم نصرت، ڈاکٹر خالد مقبول صدیقی ، سینیٹر بابر غوری اور رکن سندھ اسمبلی عادل صدیقی شامل تھے۔ ملاقات میں اس بات پر اتفاق پایا گیا کہ ملک کی سیاسی جماعتوں میں مختلف سیاسی امور پر روابط اور مشاورت جمہوری عمل کا حصہ ہیں۔ ملاقات میں جناب آصف علی زرداری نے ایم کیو ایم کے قائد جناب الطاف حسین کیلئے بھی نیک جذبات کا اظہار کیا۔
ایم کیو ایم شعبہ اطلاعات کے مطابق بعض ذرائع ابلاغ میں ہونے والی ان قیاس آرائیوں میں کوئی حقیقت نہیں ہے کہ ایم کیو ایم نے سندھ حکومت میں شمولیت کا فیصلہ کرلیا ہے ۔ اعلامیہ کے مطابق جناب آصف علی زرداری سے ہونے والی ملاقات میں بھی اس حوالہ سے کوئی گفتگو نہیں کی گئی۔ اعلامیہ کے مطابق سیاسی جماعتوں میں روابط جمہوری عمل کا حصہ ہیں اور ملاقاتوں کو مذاکرات قرار دینا غیر مناسب ہے۔

12/5/2016 4:32:40 AM