Altaf Hussain  English News  Urdu News  Sindhi News  Photo Gallery
International Media Inquiries
+44 20 3371 1290
+1 909 273 6068
[email protected]
 
 Events  Blogs  Fikri Nishist  Study Circle  Songs  Videos Gallery
 Manifesto 2013  Philosophy  Poetry  Online Units  Media Corner  RAIDS/ARRESTS
 About MQM  Social Media  Pakistan Maps  Education  Links  Poll
 Web TV  Feedback  KKF  Contact Us        

سندھ میں لسانی نفرت وتعصب کی سیاست کابیج قائدتحریک الطاف حسین نے نہیں بلکہ ذوالفقارعلی بھٹو نے بویا۔ندیم نصرت


سندھ میں لسانی نفرت وتعصب کی سیاست کابیج قائدتحریک الطاف حسین نے نہیں بلکہ ذوالفقارعلی بھٹو نے بویا۔ندیم نصرت
 Posted on: 4/7/2017 1
سندھ میں لسانی نفرت وتعصب کی سیاست کابیج قائدتحریک الطاف حسین نے نہیں بلکہ ذوالفقارعلی بھٹو نے بویا۔ندیم نصرت
کیا جولائی 1972ء میں سندھ اسمبلی میں اردوسے نفرت وتعصب پرمبنی لسانی بل ایم کیوایم نے پیش کیا تھا ؟ 
کیاجولائی 1972ء میں اردوزبان کی حمایت میں احتجاج کرنے والے مہاجروں کوگولیوں کانشانہ ایم کیوایم نے بنایاتھا ؟
جب 1972ء میں لاڑکانہ، خیرپور ، نوابشاہ اوراندرون سندھ کے دیگرشہروں سے ہزاروں مہاجروں کونقل مکانی پر مجبور
کیا گیا ، کیا اس وقت ایم کیوایم کاکوئی وجود تھا ؟ کیا اس وقت قائدتحریک الطاف حسین میدان سیاست میں تھے ؟
1973ء میں سندھ میں شہری اوردیہی کوٹہ سسٹم کیا قائدتحریک الطاف حسین نے نافذکیاتھایاذوالفقارعلی بھٹونے ؟
مرادعلی شاہ بتائیں کہ سندھ سیکریٹریٹ میں ایک کلرک سے لیکر چیف سیکریٹری تک افسران وملازمین میں کتنے مہاجرہیں؟
پولیس کے ایک سپاہی سے لیکرآئی جی تک کتنے مہاجر ہیں ؟ کیا یہ کھلی ناانصافیاں نفرت اورتعصب پرمبنی نہیں؟
مراد علی شاہ کو قائدتحریک الطاف حسین پر نفرت کی سیاست کابہتان لگاتے ہوئے شرم آنی چاہیے۔ندیم نصرت

متحدہ قومی موومنٹ (پاکستان ) کی رابطہ کمیٹی کے کنوینرندیم نصرت نے کہاہے کہ سندھ میں لسانی نفرت وتعصب کی سیاست کابیج ایم کیوایم یاقائدتحریک الطاف حسین نے نہیں بلکہ پیپلزپارٹی کے بانی ذوالفقارعلی بھٹو نے بویا، آج کی پیپلزپارٹی کی سیاست بھی اسی مہاجردشمنی پرمبنی ہے ۔ وزیراعلیٰ سندھ سیدمرادعلی شاہ کے بیان پرتبصرہ کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ مرادعلی شاہ جواب دیں کہ کیا جولائی 1972ء میں سندھ اسمبلی میں اردوسے نفرت وتعصب پرمبنی لسانی بل ایم کیوایم نے پیش کیا تھا ؟ کیا اس وقت ایم کیوایم کاکوئی وجودتھا؟کیااس وقت قائدتحریک الطاف حسین میدان سیاست میں تھے؟ کیاجولائی 1972ء میں اردوزبان کی حمایت میں احتجاج کرنے والے مہاجروں کونفرت میں گولیوں کانشانہ ایم کیوایم نے بنایاتھایاپیپلزپارٹی کی متعصب حکومت نے ؟ لیاقت آباد10نمبرکی مسجدشہداء میں موجود شہدائے اردو کی قبریں بھٹوحکومت کی مہاجروں سے نفرت اورتعصب کامنہ بولتاثبوت نہیں؟کیاجب 1972ء میں سندھی گردی کا مظاہرہ کرتے ہوئے لاڑکانہ، خیرپور ، نوابشاہ اور اندرون سندھ کے دیگرشہروں میں مہاجروں کاقتل عام کیاگیااوروہاں سے ہزاروں مہاجروں کونقل مکانی پر مجبور کیا گیا ، کیا اس وقت ایم کیوایم کاکوئی وجود تھا ؟ کیا اس وقت قائدتحریک الطاف حسین میدان سیاست میں تھے ؟کیابینظیربھٹوکی حکومت میں اندرون سندھ سے ایک بار پھر مہاجروں کونقل مکانی پر مجبورنہیں کیا گیا؟ مہاجر عوام اس حقیقت کو اچھی طرح جانتے کہ جب بھی پیپلزپارٹی کی حکومت آئی اندرون سندھ سے مہاجروں کونقل مکانی کرنی پڑی اورآج بھی یہی صورتحال ہے ۔ ندیم نصرت نے وزیراعلیٰ مرادعلی شاہ سے سوال کیاکہ 1973ء میں سندھ کو لسانی بنیادوں پر تقسیم کرتے ہوئے شہری اوردیہی کوٹہ سسٹم کیا قائدتحریک الطاف حسین نے نافذ کیا تھایاذوالفقارعلی بھٹونے ؟مرادعلی شاہ بتائیں کہ سندھ سیکریٹریٹ میں ایک کلرک سے لیکر چیف سیکریٹری تک افسران وملازمین میں کتنے مہاجرہیں؟پولیس کے ایک سپاہی سے لیکرآئی جی تک کتنے مہاجر ہیں ؟ کیا یہ کھلی ناانصافیاں نفرت اورتعصب پرمبنی نہیں؟کیاان انصافیوں کے خلاف آوازاٹھانا تعصب ہے؟ ان تمام حقائق کو جھٹلاتے ہوئے وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ الٹا قائدتحریک الطاف حسین پر نفرت کی سیاست کابہتان لگارہے ہیں ،مرادعلی شاہ کویہ بہتان لگاتے ہوئے شرم آنی چاہیے ۔ ندیم نصرت نے مزید کہا کہ مہاجروں سے نفرت وتعصب کی جوبنیاد ذوالفقارعلی بھٹونے ڈالی تھی ، پیپلز پارٹی کی تمام سیاست اسی نفرت وتعصب پرقائم ہے ، حیدرآبادمیں شہری یونیورسٹی کے قیام کی مخالفت بھی پیپلزپارٹی کی مہاجردشمنی کی واضح مثال ہے ۔ ندیم نصرت نے کہاکہ پیپلزپارٹی آج بھی شہری سندھ کوجس طرح اپنے ظلم وستم کانشانہ بنارہی ہے ،خصوصاً مہاجروں کے خلاف جومتعصبانہ اقدامات کررہی ہے وہ شہری سندھ کے عوام کوبہت کچھ سوچنے پر مجبور کررہے ہیں اوروہ دن دور نہیں کہ جب سندھ کے عوام سندھ کولوٹنے والی پیپلزپارٹی کااحتساب کریں گے۔


5/24/2017 8:29:12 AM