Altaf Hussain  English News  Urdu News  Sindhi News  Photo Gallery
International Media Inquiries
+44 20 3371 1290
+1 909 273 6068
[email protected]
 
 Events  Blogs  Fikri Nishist  Study Circle  Songs  Videos Gallery
 Manifesto 2013  Philosophy  Poetry  Online Units  Media Corner  RAIDS/ARRESTS
 About MQM  Social Media  Pakistan Maps  Education  Links  Poll
 Web TV  Feedback  KKF  Contact Us        

تمام حق پرست نمائندے مشترکہ طور پر اعلان کرتے ہیں کہ جناب الطاف حسین ہمارے قائد ہیں،طاہرکھوکھر


تمام حق پرست نمائندے مشترکہ طور پر اعلان کرتے ہیں کہ جناب الطاف حسین ہمارے قائد ہیں،طاہرکھوکھر
 Posted on: 8/3/2015 1
تمام حق پرست نمائندے مشترکہ طور پر اعلان کرتے ہیں کہ جناب الطاف حسین ہمارے قائد ہیں،طاہرکھوکھر
ہم کسی بھی صورت میں الطاف حسین سے علیحدگی کا تصور نہیں کرسکتے
وزیر اعظم آزاد کشمیراراکین اسمبلی کو بھی اپنا مزارع سمجھتے ہیں جس کو جب چاہیں وہ حکم عدولی پر نوکری سے نکال دیں
حق پرست اراکین اسمبلی عبدالوسیم،محبوب عالم اوردیگررہنماؤں کے ہمراہ طاہرکھوکھرکی پریس کانفرنس
اسلام آباد۔۔۔03 ؍ اگست2015
آزادکشمیرقانون سازاسمبلی میں ایم کیو ایم کے پارلیمانی لیڈر محمد طاہرکھوکھر نے کہا ہے کہ آزاد کشمیر اور پاکستان کی اسمبلیوں میں موجود تما م حق پرست نمائندے مشترکہ طور پر اعلان کرتے ہیں کہ جناب الطاف حسین ہمارے قائد ہیں‘ کل بھی ان کے ساتھ تھے ‘ آج بھی ان کے ساتھ ہیں اوریہ اسمبلیوں کی رکنیت کیا چیز ہے ہم کسی بھی صورت میں الطاف حسین سے علیحدگی کا تصور نہیں کرسکتے۔انہوں نے کہاکہ 72 گھنٹے تو بہت دور ہیں۔ان خیالات کا اظہارانہوں نے وزیراعظم آزادکشمیر کے الطاف حسین سے علیحدگی اور لاتعلقی بارے 72 گھنٹے کا الٹی میٹم دئیے جانے والے بیان کو نہایت افسوسناک اور آمرانہ قراردیتے ہوئے حق پرست اراکین قومی اسمبلی عبدالوسیم ‘ محبوب عالم و دیگر رہنماؤں کے ہمراہ ہنگامی پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ طاہرکھوکھرنے کہا کہ وزیر اعظم آزاد کشمیراراکین اسمبلی کو بھی اپنا مزارع سمجھتے ہیں جس کو جب چاہیں وہ حکم عدولی پر نوکری سے نکال دیں ہم جس عوام کے ووٹوں سے منتخب ہو کراسمبلی میں پہنچے ہیں وہ الطاف حسین کے چاہنے والے ہیں اوریہ ووٹ انہوں نے ہمیں نہیں بلکہ الطاف حسین کودیئے ہیں۔انہوں نے کہاکہ الطاف حسین سے علیحدگی کاخواب دیکھنے والے احمقوں کی جنت میں رہتے ہیں ہم عوام کے حقوق کی جنگ جناب الطاف حسین کی قیادت میں اسمبلی کے اندراور باہر لڑتے رہے ہیں گے۔انہوں نے کہا کہ الطاف حسین نے ہفتہ کی شب امریکہ میں اپنے خطاب کے دوران بھارت ،اقوام متحدہ اور نیٹو سے کسی قسم کی مدد طلب نہیں کی نہ ہی ان سے کسی مداخلت کی درخواست کی ہے۔جناب الطاف حسین ملک کے 5کروڑمہاجروں سمیت ملک بھر کے مظلوم عوام کے قائد ہیں جناب الطاف حسین کے بغیر ایم کیو ایم کی کوئی اہمیت نہیں،الطاف حسین ہی ایم کیو ایم ہے ، جناب الطاف حسین اور مہاجروں کو الگ الگ کرنے والوں کو عوام کو گمراہ کرنے سے پرہیز کرنا چاہئے،ہر پاکستانی شہری کی جان کا تحفظ وزیر اعظم پاکستان اور وزیر اداخلہ کی ذمہ داری ہے ، ایم کیو ایم کے آئینی مطالبات پر کوئی کارروائی نہیں کی جارہی ، چوہدری نثار اور دیگر سیاسی رہنما ایم کیو ایم پر بڑھ چڑھ کر تنقید کر رہے ہیں لیکن ہمارے ساتھ زیادتیوں کے خلاف انسانی حقوق کمیشن برائے پاکستان کے علاوہ کوئی ادارہ یا فرد بات نہیں کر رہا‘ حالیہ آپریشن کے دوران 50 سے زائد کارکنان کو ماورائے عدالت قتل کیاگیا اور سینکڑوں لاپتہ ہیں جس ملک میں عدالتیں بھی مظلوموں کو انصاف کی فراہمی میں ناکام ہو جائیں تو مظلوم کدھر جائیں اور کیا کریں ظلم جب حد سے بڑھ جائے تو چیخ و پکار کرنا تو مظلوم کا حق ہے ‘ ایسا لگتا ہے کہ وفاقی حکومت اوراسٹیلشمنٹ کے بعد اب وزیراعظم آزادکشمیربھی یہ حق چھیننا چاہتے ہیں۔طاہرکھوکھر نے کہا کہ اگر وزیراعظم آزادکشمیریا کوئی اور یہ سمجھتا ہے کہ اس طرح کی دھمکیوں یا الٹی میٹم سے ہم ایم کیو ایم یا قائد تحریک الطاف حسین بھائی سے علیحدگی اختیار کرلیں گے تو یہ ان کی خام خیالی ہے ۔طاہرکھوکھر نے کہا کہ وزیراعظم چوہدری عبدالمجید کو چاہیے کہ ایم کیو ایم کے قائد الطاف حسین کے خلاف قرارداد لانے سے پہلے وہ اپنے قائد اور پی پی کے شریک چیئرمین آصف زرداری کیخلاف قرارداد اسمبلی میں لائیں جنہوں نے پاک فوج اور اس کے سپہ سالار کے بارے میں جو کچھ کہا وہ پوری دنیا کے سامنے ہے ‘ وزیراعظم کو چاہیے کہ وہ ن لیگ کی قیادت اور خصوصا وزیردفاع خواجہ آصف کیخلاف بھی قرارداد اسمبلی میں لائیں ‘ پی ٹی آئی کے دھرنے کے دوران پوری قوم اور دنیا نے سنا کہ ن لیگ کی قیادت تھرڈ امپائیر کے نام پر کسی کے خلاف غلیظ اور نازیبا زبان استعمال کرتی رہی ‘ وزیراعظم اور ایم کیو ایم کیخلاف ہرزہ سرائی کرنے والے دیگر عناصر بتائیں کہ 2005 کے قیامت خیز زلزلہ میں کئی دہائیوں سے برسراقتدار اور ملکی خزانہ پر قابض ان کی قیادت اور جماعتیں کہاں تھیں‘ ایم کیو ایم ہی ملک کی وہ واحد سیاسی تحریک تھی جس نے عملی طور پر آزادکشمیر میں زلزلہ متاثرہ بھائیوں کی مدد کی اور ان کی خدمات آج بھی عوام یاد کرتے ہیں۔ طاہرکھوکھرنے کہا کہ وزیراعظم پاکستان میں مہاجرین کے ساتھ ہونے والی زیادتیوں کا حصہ بننے کے بجائے آزادکشمیر میں مہاجرین کے ساتھ ہونے والی زیادتیوں کاازالہ کریں ‘ ایم کیو ایم سب کا آسان ہدف اس لئے کہ وہ متوسط طبقہ کی نمائندگی کرتی ہے ‘ ہم غریب ‘ مظلوم ‘ محکوم اور متوسط طبقات کے حقوق کی جدوجہد ترک نہیں کریں گے وزیراعظم چوہدری عبدالمجید کے اختیار میں جو ہے وہ کریں ہمیں کوئی اعتراض نہیں ہم پہلے بھی عوام کی عدالت میں سرخرو ہوئے اور آئندہ بھی ہوں گے۔پریس کانفرنس میں ایم کیو ایم کے ایم این اے عبدالوسیم کے علاوہ دیگر رہنما بھی موجودتھے۔

12/8/2016 4:03:12 PM